نماز قضا کرنے کا گناہ
 رسول معظم نور مجسم صلی اللہ علیہ والسلام  کا ارشار ہے، جو شخص نماز قضا کردے اور بعد میں قضا پڑھ لے، وہ اپنے وقت پر نماز پڑھنے کی وجہ سے ایک حقب جہنم میں جلے گا۔ حقب کی مقدار اسی (۸۰) سال ہوتی ہے اور ایک سال تین سو ساٹھ (۳۶۰) دن کے جبکہ قیامت کا ایک دن ایک ہزار سال کے برابر ہوگا۔
(یعنی ایک نماز قضا کرنے والے کو دو کروڑ اٹھاسی لاکھ سال جہنم میں رہنا ہو گا۔ العیاذ با للہ  تعالی)… (مجالس الابرار)
صدر الشرریعہ علامہ مولانا امجد علی اعظمی قدس سرہ فرماتے ہیں ، نماز کو مطلقا چھوڑ دینا تو سخت ہولناک بات ہے نماز قضا کرنے والوں کے لیے رب تعالی فرماتا ہے، خرابی ہے ان نمازیوں کے لیے جو اپنی نمازوں سے بے خبر ہیں، وقت گذار کر پڑھنے اٹھتے ہیں)۔  (الماعون، ۴)  جہنم میں ایک وادی ہے جس کی سختی سے جہنم بھی پناہ مانگتا ہے اس کا نام ویل ہے قصدہ نماز قضا کرنے والے اسکے مستحق ہیں۔(بہار شریعت، حصہ سوم ص ۲)