اللہ والوں کي نماز

اللہ والوں کي نماز
 نماز اس شخص کي طرح پڑھني چاہيے جسے يقين ہو کہ يہ اس کي زندگي کي آخري نمازہے حضرت خاتم بلخي رحمتہ اللہ عليہ سے کسي نے پوچھا، آپ نماز کيسے پڑھتے ہيں؟ آپ نے فرمايا، (جب نماز کا وقت ہوتاہے تو اچھي طرح وضو کر کے جائے نماز پر اطمينان سے کھڑا ہوجاتا ہوں ار و يہ تصور کرتا ہوں کہ کعبہ ميرے سامنے ہے، جنت ميرے دائيں طرف اور دوزخ ميرے بائيں طرف ہے اور ميں پل صراط پر کھڑا ہوں، اور ميں سمجھتا ہوں کہ موت کا فرشتہ ميرے سر پرہے اور يہ ميري زندگي کي آخري نماز ہے؟
پھر ميں نہايت عاجزي سے اللہ اکبر کہتا ہوں، معاني کو ذہن ميں رکھ کر تلاوت کرتا ہوں اور نہايت خشو ع و خضوع سے نماز ادا کرتا ہوں پھر اللہ تعالي کي رحمت سے اس کے قبول ہونےکي اميد رکھتا ہوں اور اپنے اعمال کے ناقص ہونے کي وجہ سے اس کے ٹھکراديے جانے کا خوف کرتا ہوں)  اللہ اکبر!
يہ ہے اللہ والوں کي نماز! باري تعالي ہميں اولياء کرام کے نقش قدم پر چلنے کي توفيق عطا فرمائے آمين

جواب دیجئے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.