چور

چور
 ہر دنیا دار کا محبوب چور ہوتا ہے جب یہ اس سے پیار کرتا ہے وہ پہلی ملاقات میں نیند چراتا ہے ۔۔۔۔ چین چراتا ہے ۔۔ یہ چرانے کا سلسلہ پھر چل نکلتا ہے ۔۔۔ پھر سکون بھی چوری ہوجاتا ہے ۔۔ حتٰی کہ یہ چور ڈاکو بن جاتا ہے اور اس کی نظروں کے سامنے اس سے سب کچھ چھین لیتا ہے ، اسی چور کو وہ بخوشی دل و دماغ کے تمام پلاٹ مفت میں دیتا ہے کہ تم اس میں اپنا اڈا بنالو ۔۔۔ پھر یہ اس کے اہم مقامات پر قبضہ کرلیتا ہے اس کا تمام کنٹرول اس کے ہاتھ میں چلاجاتا ہے ۔۔۔ پھر یہ خود کیلئے کچھ نہیں کرتا نہ خدا کے لئے کچھ کرتا ہے بلکہ سب کچھ اسی کے لئے کرتا ہے ۔۔۔۔ وہ اس کا سب کچھ لے لیتا ہے ۔۔۔ اسے صرف ایک شے دیتا ہے ۔۔۔ آپ کو معلوم ہے وہ کیا ہے ؟ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
 وہ ہے آہ
 میں نے کسی خادند کے منہ سے واہ نہیں سنی جب سنی ہے آہ ہی سنی ۔

جواب دیجئے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.