بِسْمِ اللّٰهِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِيْمِ

فَاَزَلَّهُمَا الشَّيۡطٰنُ عَنۡهَا فَاَخۡرَجَهُمَا مِمَّا كَانَا فِيۡهِ‌ وَقُلۡنَا اهۡبِطُوۡا بَعۡضُكُمۡ لِبَعۡضٍ عَدُوٌّ ۚ وَلَـكُمۡ فِى الۡاَرۡضِ مُسۡتَقَرٌّ وَّمَتَاعٌ اِلٰى حِيۡنٍ

پس شیطان نے انہیں اس درخت کے ذریعے لغزش میں مبتلا کیا ‘ اور جہاں وہ رہتے تھے وہاں سے انکو نکال دیا ‘ ہم نے فرمایا : تم (سب) نیچے اترو ‘ تم میں سے بعض ‘ بعض کے دشمن ہوں گے اور تمہارے لیے زمین میں ایک وقت مقرر تک ٹھکانا اور فائدہ اٹھانا ہے

[Tibyan-ul-Quran 2:36]