أَعـوذُ بِاللهِ مِنَ الشَّيْـطانِ الرَّجيـم

بِسْمِ اللّٰهِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِيْمِ

تُوۡلِجُ الَّيۡلَ فِى النَّهَارِ وَتُوۡلِجُ النَّهَارَ فِى الَّيۡلِ‌ ۖوَتُخۡرِجُ الۡحَـىَّ مِنَ الۡمَيِّتِ وَتُخۡرِجُ الۡمَيِّتَ مِنَ الۡحَـىِّ‌ ۖ وَتَرۡزُقُ مَنۡ تَشَآءُ بِغَيۡرِ حِسَابٍ

ترجمہ:

تو رات کو دن میں داخل کرتا ہے اور دن کو رات میں داخل کرتا ہے اور تو زندہ کو مردہ سے نکلتا ہے اور مردہ کو زندہ سے نکالتا ہے اور تو جس کو چاہے بےحساب رزق دیتا ہے

تفسیر:

اللہ تعالیٰ کا ارشاد ہے : تورات کو دن میں داخل میں کرتا ہے اور دن کو رات میں داخل کردیتا ہے سردیوں میں بتدریج رات لمبی ہوتی رہتی ہے اور دن چھوٹا ہوتا رہتا ہے اور گرمیوں میں دن بتدریج لمباہو تا رہتا ہے اور رات چھوٹی ہوتی ہے کبھی دن اور رات میں بہت فرق ہوتا ہے اور کبھی دونوں معتدل ہوتے ہیں اور قطبین میں یہ فرق بہت زیادہ ہوجاتا ہے وہاں چھ ماہ کا دن اور چھ ماہ کی رات ہوتی ہے اور بلغاریہ میں سورج غروب ہونے کے ایک گھنٹہ بعد صبح طلوع ہوجاتی ہے اور وہاں کے رہنے والے عشاء کی نماز کا وقت نہیں پاتے۔

اللہ تعالیٰ زندہ کو مردہ سے نکالتا ہے یا تو اس سے مادی طور پر نکالنا مراد ہے جیسے اللہ تعالیٰ بیج سے درخت کو نکالتا ہے نطفہ سے انسان کو اور انڈے سے پرندے کو یا اس سے معنوی طور پر نکالنا مراد ہے جیسے اللہ تعالیٰ جاہل سے عالم کو پیدا کرتا ہے اور کافر سے مومن کو پیدا کرتا ہے ‘ اور مردہ کو زندہ سے نکالنا اس کے برعکس ہے جیسے بیج کو درخت سے نطفہ کو انسان اور جاہل کو عالم سے اور کافر کو مومن سے پیدا کرتا ہے اور جس کو چاہتا ہے مال اور رزق سے بےحساب عطا فرماتا ہے۔

یعنی اے اللہ ! تو اس پر قادر ہے کہ عجم سے ملک چھین کر عرب کو عطا فرما دے اور بنو اسرائیل سے نبوت لے کر بنو اسماعیل کو عطا فرما دے۔

امام ابو القاسم سلیمان بن احمد طبرانی متوفی ٣٦٠ ھ اپنی سند کے ساتھ روایت کرتے ہیں :

حضرت ابن عباس (رض) بیان کرتے ہیں کہ نبی کریم (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) نے فرمایا اللہ کا وہ اسم اعظم جس کے ساتھ دعا کی جائے تو وہ دعا قبول ہو آل عمران کی اس آیت میں ہے : ” اللہم مالک الملک تؤتی الملک من تشاء “۔ الآیۃ : (المعجم الکبیر ج ١٢ ص ‘ ١٣٣ مطبوعہ داراحیاء التراث العربی ‘ بیروت)

اس حدیث کی سند میں جسر بن فرقد ضعیف راوی ہے۔ (مجمع الزوائد ج ١٠‘ رقم الحدیث : ١٧٢٦٣‘ مطبوعہ دارالفکر بیروت ١٤١٤ ھ)

تفسیر تبیان القرآن – سورۃ 3 – آل عمران – آیت 27