خانقاہی نظام.

آج اخبار میں ایک پیر کا بیان پڑھا تو بہت ہنسی آئی.بیان یہ ہے”خانقاہی نظام کا کام مخلوق خدا کا تعلق خالق حقیقی اور دربار رسالت مآب سے جوڑنا ہے” واہ جی واہ.آپ کیا یہی کام کر رہے ہیں? آپ مخلوق خدا کا تعلق خالق حقیقی سے جوڑ رہے ہیں?آپ کا اپنا تعلق خالق حقیقی سے کہاں جڑا ہوا ہے جو آپ مخلوق کا تعلق خالق حقیقی سے جوڑیں گے.بے چارے عوام کو مت دھوکا دیں.آپکااپنا تعلق تو صرف اور صرف مریدوں کی جیبوں کے ساتھ جڑا ہوا ہے.جو مرید تمہارے پاس آتا ہےوہ تمہیں کچھ دے کے جاتا ہے لے کے کچھ نہیں جاتا کہ آپ کے پاس کچھ نہیں ہے.بیان کی حد تک تو بیان تھیک ہے.لیکن آپ کیا یہ ثابت کر رہے ہیں کہ ہم لوگ مخلوق کا تعلق اللہ سے جوڑتے ہیں.او بھائی آپ تو مخلوق کے خالق سے جڑے ہوئے تعلق کو توڑ رہے ہیں.آپ نے مخلوق کا اللہ سے منہ موڑ کر تعویذ گنڈوں کی طرف لگا دیا ہے.آپ جو کمالات اپنے تعویزوں کے بیان کرتے ہو کبھی اللہ کا کوئی کمال بھی بیان کیا ہے.اپنے باپ دادا کی کرامات بیان کرتے تھکتے نہیں ہو کبھی رسول اللہ کی طرف بھی مریدوں کو مائل کیا ہے.اپنا ریٹ بڑھانے کے لیے اپنے آپ کو حسنی حسینی سید کہتے ہو.جتنا بڑا سالانہ جلسہ اپنے باپ دادا کا کرتے ہو کبھی حسن حسین کا بھی کیا ہے?

تمھارا دم کرنا لگی ہوئی مرض کو اور بڑھا دیتا ہے وہ اور تھے جنکا “چھو” ظاہری بیماریاں تو کیا اندر کی دنیا بدل دیتا تھا.تمھارا چھو تو ایسا تعفن پھیلاتا ہے انسان اندر سے تباہ ہوجاتا ہے.یہ مرجع خلائق مزار جو کبھی دکھی انسانیت کا ملجاء وماوی ہوتے تھے آج آپ کےلیے نوٹ بنانے والی مشینیں ہیں.تم فوٹو سٹیٹ تعویذ بیچ کر مخلوق خدا کی جیبوں پر ڈاکے ڈال رہے ہو.لوگ تمہیں پیسے لنگر کے لیے دیتے ہیں تم ان سے لندن کے سیر سپاٹے کرتے ہو.تم نے خانقاہی نظام کو خاندانی نظام میں تبدیل کر دیا ہے.مجھے بتاو تمہارے خاندان میں جتنےگدی کے” رولے” ہیں.جائیدادوں پر اتنے تنازعے نہیں ہیں عامتہ الناس میں.اگر تمہارے باپ کا مرید غلطی سے تمہارےسگے بھائی کے پاس چلا جائے تو وہ تمہارے نزدیک کافر ہوجاتا ہے.یہ ہے تمہارا خانقاہی نظام جو مخلوق کو خالق سے جوڑتا ہے.

صرف ایک کام بتا دو جو تم گدی پر مخلوق کی ھدایت کے لیے کر رہے ہو.صرف ایک…….تمہارے آباء اب ان مزاروں میں نہیں ہیں وہ یہاں سے کہیں اور منتقل ہوچکے ہیں.انہوں نے اپنے رب سے یہاں سے نکل جانے کی دعائیں مانگی ہونگی کہ ربنا اخرجنا من ھذہ القریتہ الظالم اھلہا.

کوئی نظام صلوہ… کوئی نظام درس وتدریس….کوئی نظام اصلاح احوال….کوئی درس شریعت…. کوئی درس تصوف

,پیرا..!کوئی ایک چیز تو بتا جو مخلوق کو خالق سے جوڑنے کے لیے تم کررہے ہو.

دھوکہ اور بس صرف دھوکہ.

اللہ ہم سب کو دھوکے بازوں سے بچائے.

طالب دعاء

گلزار احمد نعیمی.