ایک وضو سے چند نمازیں پڑھیں اور اپنے موزوں پر مسح فرمایا

حدیث نمبر :296

روایت ہے حضرت بریدہ سے ۱؎ کہ نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے فتح مکہ کے دن ایک وضو سے چند نمازیں پڑھیں اور اپنے موزوں پر مسح فرمایا۲؎ تو حضرت عمر نے عرض کیا کہ آج حضور نے وہ کام کیا جو کرتے نہ تھے فرمایا اے عمر ہم نے قصدًا کیا۳؎(مسلم)

شرح

۱؎ آپ بریدہ ابن ابی حُصَیب اسلمی ہیں،بدر سے پہلے اسلام لائے،بیعت الرضوان میں حاضر ہوئے،پہلے مدینہ طیبہ پھر بصرہ میں قیام رہا،پھر خراسان میں غازی ہوکرگئے،مقام مرو میں ۷۲ھ؁ میں وفات پائی۔

۲؎ فتح مکہ کے دن ایک وضو سے پانچ نمازیں پڑھیں،اور وضو میں چمڑے کے موزوں پر مسح فرمایا،اس سے پہلے ہر نماز کے لیے وضو کرتے تھے،اورپاؤں شریف دھوتے تھے اسی لیئے عمر فاروق کو تعجب ہوا۔

۳؎ تاکہ اپنے عمل شریف سے امت کو دو مسئلے بتادیں۔ایک یہ کہ ایک وضوسے چند نمازیں جائز ہیں۔دوسرے یہ کہ موزوں پر مسح سنت ہے،اگرچہ ہرنماز کے لئے تازہ وضو بہتر ہے۔خیال رہے کہ حضور صلی اللہ علیہ وسلم کا غیرمستحب کام کرنا بھی باعث ثواب ہے کہ اس میں تبلیغ ہے۔

جواب دیجئے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.