پہلی صدی کے آخر تک بعض صحابہ موجود تھے

پہلی صدی کے آخر تک بعض صحابہ موجود تھے

صحابہ کرام رضوان اللہ تعالیٰ علیہم اجمعین کی ان مساعی جلیلہ کے بعد احادیث کی روایت کتابت اورانکی حفاظت کا سلسلہ یہاں آکر ختم نہیں ہوگیا تھا بلکہ جس طرح صحابہ کرام نے اس سرمایۂ دین ومذہب کوجان سے زیادہ عزیز رکھا اسی طرح بعد کے لوگوں نے بھی اسکو سینہ سے لگائے رکھا ۔

صحابہ کرام کا دور پوری صدی کو محیط ہے ،گویا سوسال تک حضور سیدعالم صلی اللہ تعالیٰ علیہ وسلم کی حیات طیبہ کے قولی اورعملی نمونے اس دنیا میں نوروعرفان کی بارش فرماتے رہے ،ستر اسی سال تک رہنے والے اصحاب رسول توکثیر تعداد میں تھے لیکن مندرجہ ذیل چار حضرات کا وصال تو صدی کے آخر اوربعض کا دوسری صدی میں ہوا ۔

۱۔ حضرت انس بن مالک ۲۔ حضرت محمود بن ربیع ۳۔ حضرت ہرماس بن زیاد باہلی ۴۔ حضرت ابوالطفیل عامر بن وائلہ

رضی اللہ تعالیٰ عنہم

آخری صحابی حضرت ابوالطفیل کا ۱۱۰ھ میں بمقام مکہ مکرمہ وصال ہوا ۔لہذایہ بات اپنے مقام پر بالکل متحقق اور طے شدہ ہے کہ پوری ایک صدی تک دنیا صحابہ کرام کے فیض سے مستفیض رہی ۔ انکے تلامذہ میں جلیل القدر تابعین ،ائمۂ مجتہدین اور فقہاء و محدثین شمار کئے جاتے ہیں ۔تابعین نے چونکہ بلاواسطہ جماعت صحابہ سے اکتساب فیض کیاتھا اس لئے انکی زندگی انہیں امورسے عبارت تھی جنکا درس صحابہ کرام نے ان کودیاتھا ۔

علم حدیث کی ترویج واشاعت کا یہ دوراپنی وسعت وہمہ گیری کے لحاظ سے کافی اہم شمار کیاجاتا ہے ،اللہ رب العزت نے انکی قوت یادداشت کووہ امتیازبخشاتھا جس پر لوگ عموما انگشت بدنداں ہیں ۔انہوں نے پوری پوری عمریں صرف اسی مشغلہ میں صرف فرمائیں اوراپنی انتھک کوششوں سے اسلامی تعلیمات کی بصورت سنت وحدیث خوب اشاعت فرمائی ۔چند نمونے ملاحظہ کرنے کے بعد قارئین خود سمجھ سکتے ہیں کہ یہ علم کن مراحل سے گذرا، حوادث زمانہ کی دست برد سے کس طرح اسکی حفاظت کی گئی ۔اور مالی قربانیوں سے بھی دریغ نہیں کیا گیا ۔

حقیقت یہ ہے کہ حب الہی اور محبت عشق رسول کے جذبہ سے سرشار لوگوں کی حالت ہی کچھ ایسی تھی کہ وہ اپنا سب کچھ لٹاکر بھی علم دین اورسنت رسول کی حفاظت کرنا چاہتے تھے ۔

جہاں تک حفاظت حدیث کا تعلق ہے وہ تو آپ پڑھ چکے کہ زبانی حفظ وضبط اور صحائف میں نقش وکتابت کے طریقوں کو اپنا کرصحابہ کرام نے اسکی حفاظت فرمائی تھی ۔

XZXZXZXZXZXZX

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.