أَعـوذُ بِاللهِ مِنَ الشَّيْـطانِ الرَّجيـم

بِسْمِ اللّٰهِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِيْمِ

وَاِنۡ يَّتَفَرَّقَا يُغۡنِ اللّٰهُ كُلًّا مِّنۡ سَعَتِهٖ‌ ؕ وَكَانَ اللّٰهُ وَاسِعًا حَكِيۡمًا ۞

ترجمہ:

اور اگر خاوند اور بیوی علیحدہ ہوجائیں تو اللہ اپنی وسعت سے ہر ایک کو دوسرے سے بےنیاز کر دے گا اور اللہ وسعت والا بڑی حکمت والا ہے

تفسیر:

اللہ تعالیٰ کا ارشاد ہے : اور اگر خاوند اور بیوی علیحدہ ہوجائیں تو اللہ اپنی وسعت سے ہر ایک کو دوسرے سے بےنیاز کر دے گا اور اللہ وسعت والا بڑی حکمت والا ہے۔ (النساء : ١٣٠) 

اس آیت میں اللہ تعالیٰ نے یہ فرمایا ہے کہ جب خاوند اور بیوی کے مزاج ہم آہنگ نہ ہوں اور ان میں موافقت اور صلح مشکل ہوجائے تو پھر وہ الگ الگ ہوجائیں اور اللہ تعالیٰ مرد کو عورت سے غنی کر دے گا ‘ اس کو پہلی بیوی سے بہتر زوجہ عطا فرمائے گا اور عورت کو مرد سے غنی کر دے گا اس کو پہلے خاوند سے بہتر خاوند عطا فرمائے گا اور بہت فضل والا اور بڑے احسان والا ہے اور اس کے تمام تکوینی اور تشریعی کاموں میں بہت حکمتیں ہیں۔

تبیان القرآن – سورۃ نمبر 4 النساء آیت نمبر 130