امام لیث بن سعد

امام لیث بن سعد

مصر کے مشہور امام جلیل لیث بن سعد جو علم میں امام مالک کے ہم پلہ سمجھے جاتے تھے ۔

بلکہ امام شافعی توفرماتے :۔

اللیث افقہ من مالک الاان اصحابہ لم یقوموا بہ۔( تہذیب التہذیب لا بن حجر، ۴/۶۱۰)

لیث بن سعد امام مالک سے زیادہ فقیہ ہیں مگر انکے تلامذہ نے انکے مسلک کی اشاعت نہیں کی ۔

انکے حسن سلوک کا اعتراف انکے ہمعصروں نے کیا ہے ،کہتے ہیں : انکی جاگیر کی سالانہ آمدنی پچیس تیس ہزار اشرفی تھی ،اسکا بڑا حصہ محدثین اور طالبان علم حدیث وفقہ پر خرچ فرماتے ،امام مالک کو سالانہ ایک ہزار اشرفیاں التزامابھیجاکرتے تھے ،بعض اوقات توآپ نےپانچ ہزار اشرفیاں تک قرض کی ادائیگی کیلئے بھیجی ہیں ۔

آپکے دسترخوان پر کھانے والے اہل علم اور طلبہ کا تذکرہ کرتے ہوئے خطیب بغدادیلکھتے ہیں:۔

کان یطعم الناس فی الشتاء الہرائس بعسل النحل وسمن البقر ،وفی الصیف سویق اللوزبالسکر۔(تاریخ بغداد للخطیب، ۳/۹)

سردیوں میں لوگوں کو ہریس کھلاتے جوشہد اور گائے کے گھی میں تیار کیاجاتاتھا ،اورگرمیوں میں بادام کا ستو شکر کے ساتھ کھلاتے تھے ۔

One comment

جواب دیجئے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.