اٹھیں کہاں ہیں غلامان احمد عربی

ہم احتجاج و مذمت کے ہو گئے خوگر
وہ کررہے ہیں منظم طرح سے نسل کشی

مظاہروں سے نہیں اب اکھڑنے والا کچھ
جو ہو سکے تو کرو ٹھوس حکمت عملی

یہ عہد ‘جیسے کو تیسا’ دکھانے والا ہے
اگر سوال ہو ترکی ، جواب دو ترکی

یہ نفسیات کے روگی نہیں ہیں، سازش ہے
مٹانا چاہتے ہیں تاب ملت عربی

اٹھو تحفظ اسلامیاں کا فکر کرو
وگرنہ نوچ کے دیں گے وہ ہر ایک کلی!

یہ ٹھان رکھا ہے اہل صلیب نے فہمی !
کہ کرکے چھوڑیں گے ہم زہر مسلموں کی خوشی

اٹھیں کہاں ہیں چھپے جانشین ایوبی

عملی اقدام کا خوگر وجویا…… چریاکوٹی