*⁉ اف_!!!

*””ٹک ٹاک”” پر باحیا مذہب کے نام لیواؤں کی بے حیائیاں ⁉*

*_ٹک ٹاک پر فحاشی پھیلانے والی مسلم بچیاں!!_*

میں تم سے مخاطب ہوں….. *کیا تم اسلام کی ماننے والی ہو، یا مذہب اسلام کو بدنام کرنے والی ؟؟*

*کیوں کہ……* اسلام تو عورتوں کو عزت دینے اور ان کے وقار کو محفوظ کرنے والا مذہب ہے، اسلام نے تو اپنے ماننے والوں کو حیا کے زیور سے مزین کیا اور حیا کے متعلق فرمایا کہ….

*” الحیاء خیر کله (یعنی ) حیا سراپا خیر ہے-“*

((📚 الصحیح للمسلم، باب عدد شعب الایمان الخ، ۱/۴۸)))

لیکن…….. بڑا المیہ یہ ہے کہ تم تو ٹک ٹاک پر غیروں کی نقالی میں بے حیائی کو فروغ دے رہی ہو.

پھر بتاؤ تم کس اسلام کو ماننے والی ہو؟؟

اسلام نے تو حیا کو ایمان کا شعبہ قرار دیا ہے، جیسا کہ حدیث میں ہے :

*الحیاء من الا یمان والبذاء من النفاق ۔ حیاء ایمان کا حصہ ہے اور بے حیائی نفاق کا حصہ ہے ۔(ت)*

((📚 جامع الترمذی ،باب ماجاء فی العیّ، ۲/ ۲۳))

خدارا ہوش کے ناخن لو.

خواب غفلت سے بیدار ہو.

اپنی مردہ ضمیر کو جھنجھوڑ کر زندہ کرو.

اور خود ٹھنڈے دماغ سے سوچو کہ:

”ٹک ٹاک پر ہونٹ ہلا کر. actors کی acting اپنا کر. ویڈیو اپلوڈ کرنے سے تم کبھی باعزت و باحیا بن سکتی ہو؟؟

اگر باحیا نہیں بن سکتی تو (مکمل طور سے) اسلام کی ماننے والی کیسے بن سکتی ہو؟؟“

سوچو ذرا، تم کہاں جا رہی ہو؟

پوری دنیا میں اپنی بے حیائی کی وجہ ناپاک نظروں کی قیدی بن رہی ہو.

نامراد مردوں کے ذریعے اپنی عزت نفس کی دھجیاں اڑا رہی ہو.

ذرا، تم اسلامی تعلیمات کے دامن میں آجاؤ نا.

پھر دیکھو کہ دنیا والے کیسی تمہاری عزت کی حفاظت کرتے ہیں.

تم کیسے نامراد مردوں کے حوس کی شکارن بننے سے محفوظ رہتی ہو،

بس ضرورت ہے کہ دوسروں کو کوسنے سے پہلے خوداپنے کردار پر نظرثانی کرلو –

* کیا تم مسلمہ ہو یا مسلم خواتین کی عزت کو پامال کرنے والی؟؟ *

*کیوں کہ…..* آج ٹک ٹاک کے بارے میں غیروں (non muslims) کی زبانی یہ حقیقت بیانی سننے کو مل رہی ہے کہ ٹک ٹاک پر بے حیائی پھیلانے والیوں میں مسلم خواتین بھی شامل ہیں (العیاذ باللہ)

اور حقیقت بھی ہے لیکن……. تم سے کہنا یہ ہے کہ:

تم جب ٹک ٹاک پر نیم برہنہ لباس پہن کر،

اپنے حسن کو دنیا والوں کے سامنے بکھیرتی ہو تو،

دنیا والے صرف تمہیں ہی بے حیا و بے غیرت نہیں کہتے ہیں،

بلکہ تمہارے مذہب پر بھی انگشت نمائ کرنا شروع کر دیتے ہیں.

لہذا بہنیں!! ذرا غور کرو.

اپنے خاطر نہ سہی.

اگر اپنے پیارے و باحیا مذہب سے محبت ہے.

تو اسی کے خاطر اس ناپاک و نازیبا حرکت سے باز آ جاؤ –

* کیا تم اللہ اور اس کے رسول کو ماننے والی ہو، یا لعنت الٰہی اور ناراضئ رسول ﷺ مول لینے والی ؟؟*

*کیوں کہ….* اللہ کی لعنت اور اس کے حبیب کی ناراضی ہے بے حیائی اور بے پردگی کے باعث جیسا کہ حدیث شریف میں ہے *”لعن اللَّهُ الناظر والمنظور الیه(یعنی) جو دیکھے اس پر بھی لعنت اور دکھائے اس پر بھی لعنت۔“*

((📚 مشکوٰہ شریف، باب النظر الی المخطوبۃ ، ص۲۷۰))

اے ٹک ٹاک پر وڈیوز اپلوڈ کرنے والیو!!

تمہیں خوف نہیں اللہ کی لعنت کا؟؟

اللہ کی گرفت اگر تمہیں جکڑ لے تو کہاں جاؤگی؟؟

اللہ کا عذاب اگر ناگہاں بے حیائی کرتے وقت آ جائے تو اس کی ملکیت سے نکل پاؤگی؟؟؟

جب اسی کی ملکیت سارے جہاں میں ہے تو پھر بے خوف اس کی لعنت و ناراض کیوں مول لے رہی ہوں؟

ذرا سا خوف الہی و حب رسول ﷺ پیدا کرو.

اس بے حیائی سے باز آؤ. ورنہ عذابِ دنیاوی و اخروی کے لیے تیار رہو –

* کیا تم حضرت عائشہ، حضرت فاطمہ، حضرت رابعہ بصریہ رضی اللہ تعالٰی عنہن سے محبت و عقیدت رکھنے والیاں ہو یا ان کی وہ عزت و عظمت، محبت و الفت جو تمام عالَم (اپنے تو اپنے غیروں) کے دلوں میں ہے اسے دور کرنے والیاں؟؟*

*کیوں کہ…….* جو جن سے محبت کرتا ہے وہ ان کے طریقے پر چلتا ہے.

ان کی رضا و خوشنودی کے لیے کوشاں رہتا ہے.

ان کے نام کو بلند کرنے کی کوشش کرتا ہے لیکن……… افسوس کہ تم اپنا نام تو فاطمہ، عائشہ، زینب، رابعہ وغیرہا رکھ لیتی ہو، لیکن ان کی پاکیزہ سیرت کو فراموش کر کے ان کے اس طریقے کو چھوڑ دیا ہے. جسے انہوں نے تمام عورتوں کے لیے سب سے اہم قرار دیا ہے یعنی *” سب سے اچھی عورت وہ ہے جسے کوئی غیر محرم مرد نہ دیکھے اور نہ ہی وہ کسی غیر مرد کو دیکھے “* ان کے انہیں پاکیزہ درس اور نیک سیرت کی وجہ سے اپنے ہی نہیں بے گانے اور مخالفین بھی آج تک انہیں *”Role model for all womens“* کے نام سے جانتے اور پہچانتے ہیں –

*اے فاطمہ، زینب، عائشہ نام رکھنے والیو!!*

تم کم از کم اپنے نام کا خیال کرو کہ تمہارا نام کن نفوس قدسیہ کے نام سے مشابہت رکھتا ہے، اور اعمال یہود و نصاریٰ و ہنادک سے مشابہت رکھنے والے کرتی ہو.

حالانکہ اللہ رب العزت نے کھلے الفاظ میں فرمایا ہے *” لاتتبعوا خطوٰت الشیطٰن ۔ شیطان (شیطان مانند انسان) کے قدموں پر نہ چلو۔“*

(( 📚القرآن الحکیم، ۲/۱۶۸)

ایسی قوموں سے مشابہت کرتے ہوئے تمہیں ڈر نہیں لگتا کہ دنیا میں تم ان کی طرح بننے میں فخر محسوس کرتی ہو، تو خدا نا کرے اگر کل قیامت کے دن بھی تمہارا حشر انہیں کے ساتھ ہو تو اس وقت کف افسوس مل کر کیا کروگی؟؟

اور یہ کچھ بعید نہیں ہے بلکہ اللہ کے رسول حضور نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کا فرمان ہے *” من تشبّہ بقوم فھو منھم ۔ (یعنی) جو شخص جس قوم سے مشابہت اختیار کرے وہ انہیں میں سے ہے۔“*

((📚 مسند امام احمد بن حنبل ، ۲/۵۰))

خدارا سنبھل جاؤ.

اپنی دنیا و آخرت کو تباہ نہ کرو-

بچیو!! کیا اب بھی ٹک ٹاک کے چند لائکز و کمنٹس کے لیے اپنی دنیاوی و اخروی زندگی کو برباد کروگی؟؟

نہیں قطعی نہیں ہم مؤمنات ہیں.

مؤمنات کی طرح زندگی بسر کریں گے – (ان شاء اللہ عزوجل)

🤲🏻اللہ رب العزت سے دعا ہے کہ اللہ تمام خواتین اسلام کو دارین کی بے حیائیوں سے محفوظ کر کے انہیں حضرت فاطمہ رضی اللہ عنہا کی چادر تطہیر کا صدقہ عطا فرمائے –

((آمین یا رب العالمین و ثم آمین بجاہ طہ و یٰسین ﷺ ))

*✍🏻شہزادئ مفتی عبد المالک مصباحی چیف ایڈیٹر دوماہی رضائے مدینہ جمشید پور وڈایریکٹر دارین اکیڈمی جھارکھنڈ*