حضورغریب نوازکی تعلیمات و ارشادات

حضور غریب نوازکی تعلیمات و ارشادات:

حضورغریب نواز نے فرمایا کہ

۱۔ نماز مومن کی معراج ہے، نماز ایک راز ہے جو بندہ اپنے پروردگار سے کہتا ہے۔ پس جو نماز سے عہدہ برآ ہوگا خلاصی پائے گا۔

۲۔ جو بھوکوں کو کھانا دیتا ہے اللہ تعالیٰ اس کی ہزار حاجتیں پوری کرتا ہے، اس کو دوزخ سے خلاصی ملتی ہے، بہشت میں اس کے لئے ایک محل تیار ہوتا ہے۔

۳۔ جس نے جھوٹی قسم کھائی اس نے گویا اپنے گھر کو ویران کیا، اس کے یہاں سے خیر و برکت اٹھ جاتی ہے۔

۴۔ اہلِ سلوک کے نزدیک یہ بڑا گناہ ہے اور اس سے زیادہ کوئی گناہ نہیں کہ کسیمسلمان کو بلا وجہ ستائے یہ عمل اللہ و رسولﷺ کی ناراضگی کا باعث ہوتا ہے۔

۵۔ اولاد کا والدین کو دیکھنا عبادت ہے چوں کہ حدیث میں آیا ہے کہ جو اولاد اپنے ماں باپ کی زیارت خدا کی خوشنودی کے لئے کرتی ہے اس کو ایک حج کا ثواب ملتاہے اور جو فرزند اپنے والدین کے پائوں چومے حق تعالیٰ اس کے نامۂ اعمال میں ہزارہا سال کی عبادت کا ثواب لکھتا ہے اور بخش دیتا ہے۔

۶۔ خدا کے نزدیک اس سے بہتر کوئی طاعت نہیں ہے: عاجزوں کی فریاد رسی، حاجت مندوں کی حاجت برآری اور بھوکوں کو کھانا کھلانا۔

۷۔ حدیث میں آیا ہے ’’اَلصُّحْبَۃُ تُأَثِّرُ‘‘ یعنی صحبت میں اثر ہے لہٰذا نیک لوگوں کی صحبت اختیار کرنا چاہئے۔

۸۔ حاجت برآری کے لئے سورۂ فاتحہ بکثرت پڑھنا چاہئے۔

اوراد و وظائف

برائے روشنیٔ چشم: حضرت خواجہ غریب نواز رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ فرماتے ہیں بعد نماز تین مرتبہ پڑھ کر انگلی پر دم کر کے آنکھ میں لگانے سے بصارت میں کمی نہ ہوگی بلکہ جو کچھ نقصان پہنچ چکا ہے، جاتا رہے گا ’’وَ السَّمَائَ بَنَیْنَاہاَ بِاَیْدٍ وَّ اِنَّا لَمُوْسِعُوْنَ وَ الْاَرْضَ فَرَشْنَاہَا فَنِعْمَ الْمَاہِدُوْنَ‘‘

برائے جملہ حاجات: حضرت خواجہ غریب نواز رحمۃ اللہ علیہ فرماتے ہیں ان آیتوں کو انگشتری پر کندہ کراکر اپنے پاس رکھے ’’وَ اِنْ یَّکَادُ الَّذِیْنَ کَفَرُوْا لَیُزْلِقُوْنَکَ بِاَبْصَارِہِمْ لَمَّا سَمِعُوْا الذِّکْرَ وَ یَقُوْلُوْنَ اِنَّہٗ لَمَجْنُوْنٌ وَّ مَا ہُوَ اِلَّا ذِکْرٌ لِّلْعَالَمِیْنَ‘‘

برائے اشیائے گمشدہ: حضرت خواجہ غریب نواز رحمۃ اللہ علیہ فرماتے ہیں کہ اس آیتِ کریمہ کو پڑھ کر گم شدہ اشیاء تلاش کی جائے تو انشاء اللہ ضرور مل جائے گی ورنہ غیب سے کوئی عمدہ شئے ملے گی ’’وَ مِنَ النَّاسِ مَنْ یَّتَّخِذُ مِنْ دُوْنِ اللّٰہِ اَنْدَاداً یُّحِبُّوْنَہُمْ کَحُبِّ اللّٰہِ وَ الَّذِیْنَ آمَنُوْآ اَشَدُّ حُبًّا لِّلّٰہِ وَلَوْ یَرَ الَّذِیْنَ ظَلَمُوْا اِذْ یَرَوْنَ الْعَذَابَ اَنَّ الْقُوَّۃَ لِلّٰہِ جَمِیْعاً وَّ اَنَّ اللّٰہَ شَدِیْدُ الْعَذَابِ‘‘

برائے ادائیگیٔ قرض: حضرت خواجہ غریب نواز رحمۃ اللہ علیہ فرماتے ہیں صبح و شام سات سات مرتبہ پڑھ لینے سے انشاء اللہ تعالیٰ قرض ادا ہو جائے گا ’’رَبِّ ہَبْ لِیْ مِنْ لَّدُنْکَ ذُرِّیَّۃً طَیِّبَۃً اِنَّکَ سَمِیْعُ الدُّعَآئِ‘‘

برائے دفعِ مصیبت: حضرت خواجہ غریب نواز رحمۃ اللہ تعالیٰ علیہ فرماتے ہیں اس آیت کو پڑھنے سے مصیبت سے نجات مل جاتی ہے ’’اِنَّ فِیْ خَلْقِ السَّمٰوٰتِ وَ الْاَرْضِ‘‘ تا آخرِ سورت۔

٭٭٭٭

مآخذ و مراجع: ماہنامہ یٰسینٓ سلطان الہند نمبر، معین الارواح، ہندوستان اور اسلام، ماہنامہ استقامت اولیاء نمبر۔

مولانا محمد شاکر علی رضوی نوری

 

جواب دیجئے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.