مزدور کی مزدوری

مزدور کی مزدوری

تحریر : شان عالم قادری مصباحی

(حدیث شریف ہے:)

حَدَّثَنَا الْعَبَّاسُ بْنُ الْوَلِيدِ الدِّمَشْقِيُّ، ‏‏‏‏‏‏حَدَّثَنَا وَهْبُ بْنُ سَعِيدِ بْنِ عَطِيَّةَ السَّلَمِيُّ، ‏‏‏‏‏‏حَدَّثَنَا عَبْدُ الرَّحْمَنِ بْنُ زَيْدِ بْنِ أَسْلَمَ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَبِيهِ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ عُمَرَ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ أَعْطُوا الْأَجِيرَ أَجْرَهُ قَبْلَ أَنْ يَجِفَّ عَرَقُهُ ۔

ترجمہ:

رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: مزدور کو اس کا پسینہ سوکھنے سے پہلے اس کی مزدوری دے دو .

سنن–ابن–ماجہ– ،جلد–سوم

وضاحت:

مطلب یہ ہوا مزدور سے مزدوری کرانے کے بعد فورا اس کی اجرت عطا کردو ،یہ نہ ہو کہ کام کرانے کے بعد اس کی مزدوری ادا کرنے کے لئے حیلے اور بہانے بناو ۔

نوٹ:

(1)اس حدیث پاک سے پتہ چلتا ہے ہمارے پیارے آقا صلی اللہ تعالی علیہ وسلم کو امت کے کمزور لوگوں کا کتنا خیال ہے ۔

(2) اس حدیث پاک سے یہ بھی پتہ چلتا ہے کہ اسلام میں "حق العبد”کی کتنی اہمیت ہے ۔

( 3)اس میں پوری امت کے لئے اس بات کا درس بھی ہے کہ اگر اللہ تعالی اگر آپ کو "نوکر چاکر”والا بناے تو ہمیشہ اپنے "ماتحتوں "کے حقوق کا خیال رکھنا چاہئے۔

مولی تعالی ہم سب کو اپنے فضل وکرم سے اپنے "ماتحتوں "حقوق ادا کرنے کی توفیق عطا فرماے۔

شان عالم قادری مصباحی بدایونی

خادم: جامعہ حنفیہ رضویہ ،سیدپور، بدایوں

جواب دیجئے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.