قَالَ رَبِّ اِنِّىۡ لَاۤ اَمۡلِكُ اِلَّا نَفۡسِىۡ وَاَخِىۡ‌ فَافۡرُقۡ بَيۡنَـنَا وَبَيۡنَ الۡـقَوۡمِ الۡفٰسِقِيۡنَ‏ ۞- سورۃ نمبر 5 المائدة آیت نمبر 25

أَعـوذُ بِاللهِ مِنَ الشَّيْـطانِ الرَّجيـم

بِسْمِ اللّٰهِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِيْمِ

قَالَ رَبِّ اِنِّىۡ لَاۤ اَمۡلِكُ اِلَّا نَفۡسِىۡ وَاَخِىۡ‌ فَافۡرُقۡ بَيۡنَـنَا وَبَيۡنَ الۡـقَوۡمِ الۡفٰسِقِيۡنَ‏ ۞

ترجمہ:

موسیٰ نے کہا اے میرے رب ! بیشک میں صرف اپنے آپ کا اور اپنے بھائی کا مالک ہوں تو ہمارے اور نافرمان لوگوں کے درمیان فیصلہ کر دے۔

تفسیر:

اللہ تعالیٰ کا ارشاد ہے : موسیٰ نے کہا اے میرے رب ! بیشک میں صرف اپنے آپ کا اور اپنے بھائی کا مالک ہوں تو ہمارے اور نافرمان لوگوں کے درمیان فیصلہ کر دے۔ (المائدہ : ٢٥) 

حضرت موسیٰ (علیہ السلام) نے جو اپنے اور فاسق لوگوں کے درمیان فیصلہ کی دعا کی تھی ‘ اس کے دو محمل ہیں : 

(١) چونکہ وہ حق سے دور چلے گئے تھے اور نافرمانی کرکے راہ راست سے ہٹ گئے تھے اور اسی وجہ سے ان کو میدان تیہ میں بھٹکنے کی سزا دی گئی تھی۔ اس لیے حضرت موسیٰ (علیہ السلام) نے دعا کی ‘ کہ ان کے متعلق فیصلہ کردیا جائے۔ 

(٢) ان کو ہم سے الگ اور متمیز کردیا جائے اور ان کو دی جانے والی سزا کے ساتھ ہمیں لاحق نہ کیا جائے۔

تبیان القرآن – سورۃ نمبر 5 المائدة آیت نمبر 25

جواب دیجئے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.