امام المسلمین ابو حنیفہ

از:۔ حضرت امام عبد اللہ بن مبارک رضی اللہ تعالیٰ عنہ

لقد زان البلاد و من علیہا ٭ امام المسلمین ابوحنیفہ

با حکام وآ ثار و فقہ ٭ کا یات الزبور علی صحیفہ

فما فی المشرقین لہ نظیر ٭ ولا فی المغربین ولا بکوفہ

یبیت مشمرا سہر اللیالی ٭ وصام نہارہ للہ خیفہ

وصان لسانہ عن کل افک ٭ وما زانت جوارحہ عفیفہ

یعف عن المحارم والملاہی ٭ ومرضاۃ الا لہ لہ وظیفہ

رأیت العاتبین لہ سفاہا ٭ خلاف الحق مع حجج ضعیفہ

و کیف یحل ان یوذی فقیہ ٭ لہ فی الارض آثار شریفہ

وقد قال بن ادریس مقالا ٭ صحیح ا لنقل فی حکم لطیفہ

بان الناس فی فقہ عیال ٭ علی فقہ الامام ابی حنیفہ

فلعنۃ ربنا اعداد رمل ٭ علی من رد قول ابی حنیفہ

٭ امام المسلمین ابو حنیفہ رضی اللہ تعالیٰ عنہ نے شہروں اور شہریوں کو زینت بخشی،

٭ احکام قرآن، آثار حدیث اور فقہ سے ، جیسے صحیفہ میں زبور کی آیات نے۔

٭ کوفہ بلکہ مشرق و مغرب میں ان کی نظیر نہیں ملتی، یعنی روئے زمین میں ان جیسا کوئی نہیں۔

٭ آپ عبادت کے لئے مستعد ہو کر بیداری میں راتیں بسر کرتے اور خوف خدا کی وجہ سے دن کو روزہ رکھتے ،۔

٭ انہوں نے اپنی زبان ہر بہتان طرازی سے محفوظ رکھی، اور انکے اعضا ہر گناہ سے پاک رہے۔

٭ آپ لہو و لعب اور حرا م کاموں سے بچے رہے ، رضائی الہی کا حصول آ پ کا ووظیفہ تھا۔

٭ امام اعظم کے نکتہ چیں بے وقوف، مخالف حق اور کمزور دلائل والے ہیں ۔

٭ ایسے فقیہ کو کسی بھی وجہ سے تکلیف دینا کیونکر جائز ہے ، جسکے علمی فیوض تمام دنیا میں پھیلے ہوئے ہیں۔

٭ حالانکہ صحیح روایت میں لطیف حکمتوں کے ضمن میں امام شافعی نے فرمایا : کہ

٭ تمام لوگ فقہ میں امام ابو حنیفہ کی فقہ کے محتاج ہیں۔

٭ ریت کے ذروں کے برابر اس شخص پر اللہ تعالی ٰ کی لعنت ہو جو امام ابو حنیفہ کے قول کو مردود قرار دے۔

ترجمہ:۔ مولانا عبد الحکیم صاحب شرف قادری برکاتی

XZXZXZXZXZXZX