أَعـوذُ بِاللهِ مِنَ الشَّيْـطانِ الرَّجيـم

بِسْمِ اللّٰهِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِيْمِ

وَاَطِيۡعُوا اللّٰهَ وَاَطِيۡعُوا الرَّسُوۡلَ وَاحۡذَرُوۡا‌ ۚ فَاِنۡ تَوَلَّيۡتُمۡ فَاعۡلَمُوۡۤا اَنَّمَا عَلٰى رَسُوۡلِنَا الۡبَلٰغُ الۡمُبِيۡنُ ۞

ترجمہ:

اور اللہ کا حکم مانو اور رسول کا حکم حکم مانو اور محتاط رہو ‘ پھر اگر تم نے حکم عدولی کی تو جان لو کہ ہمارے رسول پر تو صرف احکام کو صاف طور سے پہنچا دینا ہے۔

تفسیر:

اللہ تعالیٰ کا ارشاد ہے : اور اللہ کا حکم مانو اور رسول کا حکم حکم مانو اور محتاط رہو ‘ پھر اگر تم نے حکم عدولی کی تو جان لو کہ ہمارے رسول پر تو صرف احکام کو صاف طور سے پہنچا دینا ہے۔ (المائدہ : ٩٢) 

یعنی اللہ اور اس کے رسول نے خمر ‘ جوئے اور دیگر محرمات سے اجتناب کا جو حکم دیا ہے اس حکم پر عمل کرو اور اس بات سے ڈرو کہ اگر تم نے اللہ اور اس کے رسول کے حکم کی مخالفت کی تو دنیا میں پر کوئی مصیت آجائے گی یا تم آخرت کے عذاب میں مبتلا ہو گے ‘ جیسا کہ اللہ تعالیٰ نے اس آیت میں فرمایا : 

(آیت) ” فلیحذر الذین یخالفون عن امرہ ان تصیبھم فنتۃ اویصیبھم عذاب الیم “۔ (النور : ٦٣) 

ترجمہ : جو لوگ رسول کے امر (حکم) کی مخالفت کرتے ہیں ‘ وہ اس سے ڈریں کہ انہوں کوئی آفت پہنچے یا انہیں درد ناک عذاب۔ 

اور اگر تم نے اعراض کیا اور ہمارے رسول کی حکم پر عمل نہیں کیا تو رسول اللہ (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) تو تمہیں تبلیغ فرما چکے ہیں ‘ اللہ کی حجت تم پر پوری ہوچکی ہے اور اب تمہارے لیے کسی عذر کی کوئی گنجائش باقی نہیں رہی۔

تبیان القرآن – سورۃ نمبر 5 المائدة آیت نمبر 92