نورِ مصطفی ﷺ:

القرآن :قد جآء کم مّن اللّٰہ نُورُٗ وّکتبُٗ مبین o

ترجمہ :بیشک تمہارے پا س اللہ کی طرف سے ایک نور آیا اور ایک روشن کتاب ۔

(سورہ مائدہ ۔پارہ نمبر ۶۔آیت نمبر ۱۵)

مفسر اسلام حضرت عباس رضی اللہ عنہ اس آیت کی نور سے مراد حضور ﷺہیں اور کِتٰبُٗ مُبین سے مراد قرآن مجید ہے ۔

عقیدہ :اہلسنّت و جماعت کا یہ عقیدہ ہے کہ حضور ﷺنوری بشر ہیں حضور ﷺ کی نورا نیت پر بھی ایمان رکھا جائے اور حضور ﷺکی بشر یت پر بھی رکھا جائے ورنہ قرآنی آیت کا انکار ہوگا حضور ﷺسراپا نور ہوکر بشری لبادے میں اس لئے تشریف لائے کہ بندوں کو جہالت کے اندھیرے سے نکال کرنور کی طرف لایا جائے یہی عقیدہ صحابی رسول حضرت عباس رضی اللہ عنہ کا ہے ۔