پرویز نام رکھنا کیسا ہے؟

*السلام علیکم و رحمۃ اللہ و برکاتہ*

*کیا فرماتے ہیں علمائے دین اس مسئلہ میں کہ پرویز نام رکھنا کیسا ہے؟*

*جواب عنایت فرمائیں

محمد عقیل مدنی

*وعلیکم السلام و رحمۃ اللہ و برکاتہ*

*الجواب۔

*صورت مسئولہ میں جواب یہ ہے کہ : جہاں تک سوال ہے پرویز نام رکھنے کا تو نہیں رکھنا چاہیئے اسکی تفصیل یہ ہے کہ شہنشاہ ایران خسرو پرویز کے پاس حضور صلی اللہ تعالیٰ علیہ وسلم نے اسلام کے پیغام کا خط بھیجا – اور جب قاصد حضور صلی اللہ تعالیٰ علیہ وسلم کا خط لے کر شہنشاہ ایران خسرو پرویز کے دربار میں پہنچا ـ تو صرف اتنی سی بات پر اس کے غرور اور گھمنڈ کا پارہ چڑھ گیا کہ اس نے کہا کہ اس خط میں محمد ( صلی اللہ تعالیٰ علیہ وسلم) نے میرے نام سے پہلے اپنا نام کیوں لکھا ؟ یہ کہہ کر اس نے فرمانِ رسالت کو پھاڑ ڈالا ـ اور پرزے پرزے کرکے زمین پر پھینک دیا ـ جب حضور صلی اللہ تعالیٰ علیہ وسلم کو یہ خبر ملی تو آپ نے فرمایا کہ ( مزق كتابى مزق الله ملكه)*

*ترجمہ: اس نے میرے خط کو ٹکڑے ٹکڑے کر ڈالا ـ اللہ اس کی سلطنت کو ٹکڑے ٹکڑے کردے ـ*

*چنانچہ اس کے بعد ہی خسرو پرویز کو اِس کے بیٹے ” شِیرْوَیہ ” نے رات میں سوتے ہوئے ، اس کا شکم پھاڑ کر اس کو قتل کردیا ـ اور اس کی بادشاہی ٹکڑے ٹکڑے ہوگئی ـ* *یہاں تک کہ حضرت امیر المومنین عمر فاروق اعظم رضی اللہ تعالیٰ عنہ کے دورِ خلافت میں یہ حکومت صفحۂ ہستی سے مٹ گئی*

*( حوالہ: سیرتِ مصطفےٰ صفحہ ۲۸۰/ تا ۲۸۱/ بحوالہ مدارج النبوۃ جلد ۲/ صفحہ ۲۲۵/ وغیرہ وبخاری شریف جلد ۱/ صفحہ ۴۱۱/)*

*واللہ اعلم بالصواب*

مفتی محمد اظہار القیوم صدیقی

دارالافتاء اھلسنت سانگلہ ہل

03007639611