مفتی اعظم پاکستان مفتی منیب الرحمن صاحب کے فواد چوہدری سے تین سوال

پہلا سوال:

یہ کہ چاند کی رویت کا معاملہ خالصتاً شرعی معاملہ ہے تو کیا چاند دیکھے بغیر پہلے سے موجود کیلنڈر کے مطابق روزہ رکھنا شرعی اعتبار سے درست ہو گا؟

دوسرا سوال:

موجودہ کمیٹی میں بھی محکمہ موسمیات اور سپارکو کے ماہرین موجود ہیں اور نئی کمیٹی میں بھی شامل ہوں گے تو کیا فواد چوہدری صاحب کو اعتراض صرف علمائے کرام کی موجودگی پر ہے؟

تیسرا سب سے اہم سوال:

قمری کیلنڈر بننے کے بعد اس بات کی کیا گارنٹی ہے کہ پوپلزئی اور ان کا گروہ اس کیلنڈر کو قبول کر لے گا؟؟

یعنی اگر وہ ریاست کا تجویز کردہ کیلنڈر قبول نہیں کرتے تو مسئلہ تو وہی رہا جس کیلئے فواد چوہدری صاحب کسی سے سنبھالے نہیں جا رہے

مُفتی مُنیب الرحمان صاحب کا آخری سوال سب سے ذیادہ اہمیت رکھتا ہے۔

(منقول)