التجاء

التجاء

از:… استاذِ زمن حضرت علامہ حسن رضا بریلوی رحمۃ اللہ علیہ

درد دل کر مجھے عطا یا رب

دے میرے درد کی دوا یا رب

لاج رکھ لے گناہ گاروں کی

نام رحمن ہے تِرا یا رب

عیب میرے نہ کھول محشر میں

نام ستار ہے تِرا یا رب

بے سبب بخش دے نہ پوچھ عمل

نام غَفّار ہے تِرا یا رب

بھول کر بھی نہ آئے یاد اپنی

میرے دل سے مجھے بھلا یا رب

خاک کر اپنے آستانے کی

یوں ہمیں خاک میں ملا یا رب

تیری جانب یہ مُشْتِ خاک اُڑے

بھیج ایسی کوئی ہوا یا رب

سَبَقَتْ رَحْمَتِیْ عَلٰی غَضَبِیْ

تو نے جب سے سنا دیا یا رب

آسرا ہم گناہ گاروں کا

اور مضبوط ہو گیا یا رب

تو نے میرے ذلیل ہاتھوں میں

دامن مصطفی دیا یا رب

کر دیا تو نے قادری مجھ کو

تیری قدرت کے میں فدا یا رب

تو حسنؔ کو اٹھا حسن کر کے

ہو مَعَ الْخَیْرِ خاتمہ یا رب

جواب دیجئے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.