ہرجگہ ہر وقت درود وسلام پڑھنا چاہئے

ہرجگہ ہر وقت درود وسلام پڑھنا چاہئے :

القرآن:ترجمہ :بیشک اللہ اور اس کے فرشتے درود بھیجتے ہیں اُس غیب بتانے والے (نبی )پر اے ایمان والو ان پر درود اور خوب سلام بھیجو ۔(سورہ احزاب آیت نمبر 52،پارہ 22)

مفسرین نے اس آیت کو دلیل بتا تے ہوئے فرمایا کہ درود وسلام ہر وقت پڑھا جائے اس میں وقت کی قید نہیں ہے لہٰذا ہر وقت درود و سلام پڑھا جائے اذان سے پہلے ،اذان کے بعد ،نماز سے پہلے ،نماز کے بعد ،چلتے پھرتے ہر وقت پڑھا جائے ۔

حدیث :حضرت عروہ بن زبیر رضی اللہ عنہ نے ایک عورت سے روایت کی ہے کہ مدینے میں میرا گھر سب سے بلند تھا حضرت بلال رضی اللہ عنہ اذان سے پہلے دعائیہ کلمات کہہ کر اذان دیتے ۔

اے اللہ تحقیق میں تیری حمد کرتا ہوں اس بات پر تجھ سے مدد چاہتا ہوں کہ اہلِ قریش تیرے دین کو قائم کریں ۔(بحوالہ :ابو داؤد جلد اوّل ص 84)

حضرت بلال رضی اللہ عنہ اذان سے پہلے قریش کیلئے دُعا کرتے تھے اور ہم حضور ﷺ پر درود و سلام پڑھتے ہیں اگر اذان سے پہلے کچھ پڑھنا اذا ن کو بڑھانا اور بدعت ہوتا تو حضرت بلال رضی اللہ عنہ ہر گز دُعا نہ کرتے ۔معلوم ہوا کہ اذان سے پہلے کچھ ذکر و درود کرنا بدعت نہیں بلکہ حضرت بلال رضی اللہ عنہ کی سنت ہے ۔

جواب دیجئے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.