حدیث نمبر :543

روایت ہے حضرت عبداﷲ ابن شقیق سے ۱؎ فرماتے ہیں کہ نبی صلی اللہ علیہ وسلم کے صحابہ اعمال میں سے کسی عمل کے چھوڑنے کو کفر نہ سمجھتے تھے سواءنماز کے ۲؎ (ترمذی)

شرح

۱؎ آپ عظیم الشان تابعی ہیں،حضرت عمر،علی،عثمان،وعائشہ صدیقہ رضی اللہ عنہم سے ملاقات کی،قبیلہ بنی عقیل سے ہیں،بصرہ میں قیام رہا، ۱۰۸ھ؁ میں وفات پائی۔

۲؎ کیونکہ اس زمانہ میں نمازپڑھنامؤمن کی علامت تھی اور نہ پڑھنا کافر کی پہچان جیسے آج سر پر چوٹی،نیچے دھوتی ہندو کی پہچان ہے،اس لئے وہ حضرات جسے نماز نہ پڑھتے دیکھتے سمجھتے کافرہوگا،لہذا اس حدیث سے یہ لازم نہیں کہ نمازچھوڑناکفرہو اوربے نمازی کافرہو،اور نہ یہ حدیث ان احادیث کے خلاف ہے جن میں فرمایا گیا کہ مؤمن اگرچہ زانی ہوچورہوپھربھی جنتی یعنی جنت کا مستحق۔