اپنے تشخص کی طرف لوٹ آئیے!

*اپنے تشخص کی طرف لوٹ آئیے!*

ہندو توا قوتیں، ہندو مہا سبھا اور شدھی کرن جیسی فکر نے ایک صدی قبل ہی (1919ء میں) اسلام کے خلاف ہندوستان میں کمر کس لی تھی؛ جن کی سازشوں سے امام احمد رضا قادری رحمۃ اللہ علیہ (وصال 1921ء) نے اُسی زمانے میں پردہ اُٹھایا تھا- "المحجۃ المؤتمنۃ” ،”دوام العیش”، "تدبیر فلاح و نجات و اصلاح” جیسی کتابیں مسلمانوں کو غفلت سے بیدار کرنے میں اہم پیغامات پر مشتمل ہیں-

گاندھی کی سرگرمیاں، خلافت تحریک کے لیڈروں کی ہندو مسلم اتحاد کی آڑ میں اکبری الحاد کی کوششیں اس سوچ کا پہلا باب تھیں جسے *ہندو راشٹر* سے تعبیر کیا جا رہا ہے؛

گرچہ انگریز سے ملک کی آزادی کے زمانے (1947ء) میں ہی ہندو راشٹر کے قیام کی خواہش شرمندۂ تعبیر ہونے سے رہ گئی؛ مگر اس کے جراثیم برابر پھیلائے جاتے رہے- اور اب مودی کی آندھی میں اسے عمل کی سمت تیزی سے موڑا جا رہا ہے؛ ان حالات کے پسِ منظر عالمی سطح پر ہندوستانی مسلمانوں کے تشخص/مفاد کے لئے کسی تائیدی آواز اُٹھنے کا امکان نہیں؛

جن سعودی حکمرانوں کی اندھی عقیدت کے بعض طبقے شکار ہیں؛ انھیں اس حقیقت پر غور کرنا چاہیے کہ:

بیت المقدس کے تحفظ، بابری مسجد کی بازیابی، مسلم شرعی حدود کی پاسداری، بنا محرم حج پالیسی، تین طلاق پر قانونِ امتناع، مغربی جنونیوں کے مساجد پر حملے یا عالمی سطح کے کسی بھی مدعے پر سعودی حکمرانوں کا موقف مسلم اُمہ کا معاون یا معین نہیں ہوتا، بلکہ انھیں مسلمانوں کے مسائل سے کیا غرض:

ہائے رے سناٹا آواز نہیں آتی

اپنے تشخص، اپنی بقا، اپنے اسلامی وقار کے تحفظ کے لئے ہمیں خود سوچنا ہوگا، اسلامی زندگی کی طرف لوٹ آنا ہوگا، اپنے تمام مسائل شریعتِ اسلامی کی روشنی میں حل کرنے ہوں گے، دہریت، رافضیت اور قادیانیت سمیت فرقہ پرستوں کے تمام ایجنٹوں سے قوم کو بچانا ہوگا؛ جن کی ہم دردیاں ہمیشہ اغیار کے ساتھ ہوتی ہیں؛ اور ہر دور میں ان کے نشانہ پر صرف مسلمان رہے ہیں-

لبرل، ماڈریٹ اور جدیدیت زدہ افراد کی گھر واپسی بھی ضروری ہے، جن کی بے راہ روی سے غیر فائدہ اُٹھاتے ہیں؛ علم دین سے ہر فرد کو مرصع کرنا سب سے اہم کام ہے، اور بے راہ روی کے طوفان پر بند باندھ کر سرمایۂ ملت کی نگہ بانی وقت کا تقاضا ہے، جس کے لئے مکمل بیداری، شریعت پر عمل آوری اور اسلامی ذہن سازی کی ضرورت ہے؛

اپنی ملت پہ قیاس اقوامِ مغرب سے نہ کر

خاص ہے ترکیب میں قومِ رسول ہاشمی

***

ترسیلِ تخیل:

_غلام مصطفی رضوی_

نوری مشن مالیگاؤں

***

رمضان المبارک ١٤٤٠ھ

جواب دیجئے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.