ظہر گرمی میں

حدیث نمبر :550

روایت ہے حضرت ابن مسعود سے فرماتے ہیں کہ حضورانورصلی اللہ علیہ وسلم کی نماز کا اندازہ ظہرگرمی میں تین قدم سے پانچ قدم تک اور سردی میں پانچ قدم سے سات قدم تک تھا ۱؎(ابوداؤد،نسائی)

شرح

۱؎ یعنی حضورگرمی کے موسم میں اگرظہرجلدی پڑھتے تو جب پڑھتے تھے کہ درمیانی انسان کا سایہ تین قدم ہوجاتا،اور اگردیرمیں پڑھتے تو اس وقت پڑھتے جب انسانی قد کا سایہ پانچ قدم ہوجاتا،اورسردی میں اگرجلدی پڑھتے تو پانچ قدم سایہ پراوردیرمیں پڑھتے تو سات قدم پر کیونکہ بمقابلہ گرمیوں کے سردی میں سایہ اصلی لمبا ہوتاہے۔یہ اندازہ ملک عرب کے لحاظ سے ہے دیگر ممالک میں جاری نہیں ہوسکتا کیونکہ جگہ کا جس قدر عرض بلدزیادہ ہوگا اسی قدر سایہ لمبا ہوگا۔

جواب دیجئے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.