قرآن مجید شفا اور رحمت ہے

القرآن :وننزل من القران ماھو شفاء ورحمۃ للمؤمنین لا ولا یزید الظلمین الا خساراo

ترجمہ : اور ہم قرآن میں اتارتے ہیں وہ چیز جو ایمان والوں کیلئے شفا اور رحمت ہے اور اس سے ظالموں کو نقصان ہی بڑھتا ہے ۔(سورہ بنی اسرائیل ،پارہ :۱۵،آیت نمبر ۸۲)

القرآن :یایھا الناس قد جاء تکم موعظۃ من ربکم وشفاء لما فی الصدورلا وھدی ورحمۃ للمؤمنین o

ترجمہ :اے لوگو تمہارے رب کی طرف سے نصیحت آئی اور دلوں کی صحت اور ہدایت اور رحمت ایمان والوں کے لئے ۔(سورہ یونس ،پارہ :۱۱،آیت نمبر ۵۷)

ان دونوں آیتوں سے معلوم ہواکہ قرآن مجید شفا اور رحمت ہے لہٰذا اس کو پڑھ کر کسی بیمار یا مریض پر دم کر کے بیمار یا مریض کوکھلایا جا سکتا ہے ۔

دوسری بات یہ بھی معلوم ہوئی کہ قرآن مجید رحمت بھی ہے کوئی شخص کلام مجید کی آیتِ مبارکہ کو گھروں پر یا مکانات پر لکھ کر لٹکائے تو اس گھر میں یا دوکان میں رحمت نازل ہوگی ،اسی طرح اگر کوئی شخص مرجائے تو اسکے کفن پر شہادت کی انگلیوں سے کلام الہٰی لکھ دیا جائے یا قبر میں میت کے ساتھ رکھ دیا جائے تو اس کی وجہ سے بھی میت پر رحمت الہٰی کی بارش ہوگی ۔

مگر ایک چیز کی احتیاط کریں کہ میت کے جسم کے اوپر قرآنی آیات کونہ رکھا جائے کیونکہ میت کا پھولنا اور پھٹنا اس کے جسم کے عوار ضات سے ہے تو ایسی صورت میں ان برکت والے الفاظ کا وہاں ہونا بے ادبی ہوگی اس لئے کوشش کریں کہ قبر کے ایک طرف محراب نما جگہ بنالی جائے وہاں ان تبرکات کو رکھ دیاجائے تاکہ بے ادبی نہ ہو ،اور ادب ملحوظ رہے ۔