امام کے پیچھے سورہ فاتحہ نہیں پڑھنا چاہئے

جب امام قرأت کرے (سورہ فاتحہ ہو یا دیگر قرأت )تو مقتدی پر لازم ہے کہ وہ خاموش رہے اکیلے نماز پڑھتے وقت سورہ فاتحہ پڑھنا ضروری ہے مگر جب امام کے پیچھے ہوں تو خاموش رہیں امام کی قرأت مقتدی کی قرأت ہے ۔

اما م کے پیچھے بھی سورہ فاتحہ پڑھنے سے متعلق جو حد یثیں ہیں وہ اس آیت مبارکہ کے نزول کے بعد منسوخ ہوگئیں ۔

القرآن :واذا قریٔ القران فاستمعوا لہ وانصتوالعلکم ترحمونo

ترجمہ :جب قرآن پڑھا جائے تو اسے کان لگا کر سنو اور خاموش رہو کہ تم پر رحم ہو ۔

(سورہ اعراف ، پارہ :۹،آیت نمبر ۲۰۴)

اس آیت کے نازل ہونے کے بعد امام کے پیچھے مطلقاً قرأت منع کردی گئی اور فرمایا گیا خاموش رہا کرو۔