نماز کے واجبات

یعنی جن کا کرنا نماز کی صحت کے لئے ضروری ہے ۔ اگر ان واجبات میں سے کوئی ایک واجب سہواً (بھول کر) چھوٹ جائے تو سجدہ ٔ سہو کرنا واجب ہوگا اور سجدہ ٔ سہو کرلینے سے نماز درست ہوجائے گی ۔

اگر کسی ایک واجب کو قصداً چھوڑ دیا تو سجدہ ٔ سہو کرنے سے بھی نماز صحیح نہ ہوگی ، نماز کا اعادہ یعنی دوبارہ پڑھنا واجب ہے ۔

نماز میں حسب ذیل واجبات ہیں:-

۱۔ تکبیر تحریمہ میں لفظ ’’ اللہ اکبر ‘‘ کہنا۔ درمختار

۲۔سورہ ٔ فاتحہ پوری پڑھنا۔ یعنی پوری سورت سے ایک لفظ بھی نہ چھوٹے۔فتاوٰی رضویہ

۳۔سورہ ٔ فاتحہ کے ساتھ سورت ملانا یا ایک بڑی یا تین چھوٹی آیات ملانا۔بہار شریعت

۴۔فرض نماز کی پہلی دو رکعتوں میں الحمد شریف کے ساتھ سورت ملانا۔بہار شریعت

۵نفل ، سنت اور وتر کی ہر رکعت میں الحمد شریف کے ساتھ سورت ملانا۔بہار شریعت

۶سورہ ٔفاتحہ ( الحمد شریف) کا سورت سے پہلے ہونا ۔بہار شریعت

۷سورت سے پہلے صرف ایک ہی مرتبہ الحمد شریف پڑھنا۔بہار شریعت

۸الحمد شریف اور سورت کے درمیان فصل نہ ہونا ۔ یعنی آمین اور بسم اللہ کے سوا کچھ نہ پڑھنا۔بہار شریعت

۹قرأت کے بعد فوراً رکوع کرنا ۔ردالمحتار

۱۰قومہ یعنی رکوع سے سیدھاکھڑا ہونا۔بہار شریعت

۱۱ہر ایک رکعت میں صرف ایک ہی رکوع ہونا ۔در مختار

۱۲ایک سجدہ کے بعد فوراً دوسرا سجدہ کرناکہ دونوں کے درمیان کوئی رکن فاصل نہ ہو۔بہار شریعت

۱۳سجدہ میںدونوں پاؤں کی تین تین انگلیوں کے پیٹ زمین سے لگنا۔فتاوٰی رضویہ

۱۴جلسہ یعنی دونوں سجدوں کے درمیان سیدھابیٹھنا۔بہار شریعت

۱۵ہر رکعت میں دو مرتبہ ہی سجدہ ہونا ۔ دو سے زیادہ سجدے نہ ہونا۔فتاوٰی رضویہ

۱۶تعدیل ارکان یعنی رکوع ، سجود ، قومہ اور جلسہ میںکم از کم ایک مرتبہ سبحان اللہ کہنے کی مقدار ٹھہرنا۔عامہ ٔ کتب

۱۷دوسری رکعت سے پہلے قعدہ نہ کرنا ۔ یعنی ایک رکعت کے بعد قعدہ نہ کرنا اور کھڑاہوجانا ۔بہار شریعت

۱۸قعدہ ٔ اولیٰ اگرچہ نفل نماز ہو۔ یعنی دو رکعت کے بعد قعدہ کرنا۔منیۃ المصلی

۱۹قعدہ ٔ اولیٰ اور قعدہ ٔ اخیرہ میں پورا ’’ تشہد‘‘ ’’ (التحیات)‘‘ پڑھنا ۔درمختار

۲۰فرض ، وتر اور سنت مؤکدہ کے قعدہ ٔ اولیٰ میں تشہد کے بعد کچھ بھی نہ پڑھنا۔فتاوٰی رضویہ

۲۱چار رکعت والی نماز میں تیسری رکعت پر قعدہ نہ کرنااور چوتھی رکعت کے لئے کھڑاہوجانا ۔رد المحتار

۲۲ہر جہری نماز میں امام کا جہر (بلند آواز) سے قرأت کرنا۔درمختار

۲۳ہر سرّی نماز میںامام کا آہستہ قرأت کرنا ۔فتاوٰی رضویہ

۲۴وتر میں قنوت کی تکبیر یعنی اللہ اکبر کہنا۔عالمگیری

۲۵وتر میں دعائے قنوت پڑھنا۔فتاوٰی رضویہ

۲۶عید کی نماز میں چھ زائد تکبیر کہنا۔بہار شریعت

۲۷عید کی نماز میں دوسری رکعت کے رکوع میںجانے کے لئے ’’ اللہ اکبر‘‘ (تکبیر) کہنا ۔بہار شریعت

۲۸آیت سجدہ پڑھی ہو تو سجدہ ٔ تلاوت کرنا۔فتاوٰی رضویہ

۲۹سہو (غلطی) ہوئی ہو تو سجدۂ سہو کرنا ۔درمختار

۳۰ہر فرض اورہر واجب کا اس کی جگہ پر ہونا۔ردالمحتار

۳۱دو فرض یا دو واجب یا واجب و فرض کے درمیان تین تسبیح کی مقدار کا وقفہ نہ ہونا۔عالمگیری

۳۲جب امام قرأت پڑھے ، بلند آواز سے ہوخواہ آہستہ تب مقتدی کا چپ رہنا۔فتاوٰی رضویہ

۳۳سوا قرأت تمام واجبات میں مقتدی کا امام کی متابعت کرنا۔بہار شریعت

۳۴دونوں سلام میں لفظ ’’ السلام ‘‘ کہنا ۔ ’’ علیکم ‘‘ کہنا واجب نہیں ۔فتاوٰی رضویہ