خاتم الاکابر شاہ آل رسول مارہروی

نام ونسب:۔آل رسول ۔لقب خاتم الاکابر ۔اور والد کا نام آل برکات ستھرے میاں ہے

خانوادہ مارہرہ مطہرہ کے مشہور ومعروف بزرگ ہیں ۔

سلسلہ نسب اس طرح ہے ۔خاتم الاکابر حضرت سید آل رسول بن سیدشاہ آل برکات ستھرے میاں بن سید شاہ حمزہ بن سید شاہ ابوالبرکات آل محمد بن سید شاہ برکت اللہ بن حضرت سیدشاہ اویس بن حضرت سید شاہ عبدالجلیل قدست اسرارھم ۔

حضرت سید شاہ عبدالجلیل مارہروی پہلے بزرگ ہیں جو مارہرہ تشریف لائے آپ کا سلسلہ نسب ۳۳ واسطوں سے سیدنا امام حسین سید الشہداء مظلوم کربلا رضی اللہ تعالیٰ عنہ تک پہونچتا ہے ۔

تعلیم وتربیت :۔ تعلیم و تربیت والد ماجد کی آغوش میں ہوئی ،ابتدائی تعلیم حضرت مولانا شاہ عبدالمجید عین الحق قدس سرہ والد ماجد سیف اللہ المسلول حضرت علامہ فضل رسول بدایونی سے حاصل کی ۔

اسکے بعد آپ اور علامہ فضل رسول بدایونی کو فرنگی محل لکھنوتعلیم حاصل کرنے کیلئے بھیجا گیا ۔یہاں علامہ انوار صاحب فرنگی محلی مولانا عبدالواسع صاحب سید نپوری ،اور مولاناشاہ نور الحق رزاقی لکھنوی عرف ملانور سے کتب معقولات ،کلام ،فقہ اور اصول فقہ کی تحصیل وتکمیل فرمائی ۔ اور حضرت مخدوم شیخ العالم عبدالحق ردولوی المتوفی ۸۷۰ھ کے عرس مبارک کے موقع پر مشاہیر علماء ومشائخ کی موجود گی میں دستار فضیلت سے سرفراز فرمایا گیا ۔

اسی سال شمس الدین ابو الفضل حضرت اچھے میاں مارہروی قدس سرہ کے حکم کے مطابق سند المحدثین حضرت علامہ شاہ عبدالعزیز صاحب محدث دہلوی کے درس میں شریک ہوئے اور صحاح ستہ کا دورئہ حدیث کرنے کے بعد سند حدیث حاصل کی ۔ساتھ ہی آپ کو مندرجہ ذیل اسناد بھی عنایت فرمائیں ۔

علویہ ،منامیہ ،مصافحات مشابکہ ،سند حدیث مسلسل بالاولیت ،حدیث مسلسل بالاضافہ ، چہل اسماء ،حزب البحر ،سند قرآن کریم ،دلائل الخیرات شریف ،حصن حصین ،دیگر کتب حدیث وفقہ وتفسیر ۔

عادات و صفات:۔ آپکی عادات وصفات میں شریعت کی پوری جلوہ گری تھی ،غایت درجہ پابندی فرماتے نماز باجماعت مسجد میں ادافرماتے ۔تہجد کی نماز کبھی قضانہ ہوتی ۔نہایت کریم النفس ،عیب پوش ا ور حاجت براری میں یگانہ عصر تھے ،جو احادیث نبوی سے دعائیں منقول ہیں وہ مرحمت فرماتے ۔ تکلفات سے احتراز اور محافل سماع قطعا مسدودتھیں ۔صرف مجلس وعظ ، نعت خوانی، منقبت اورقرآن خوانی اوردلائل الخیرات شریف سے حاضرین عرس کی مہمانداری فرماتے تھے ۔ ہرخادم ومرید سے نہایت شفقت سے پیش آتے ۔

شیخ طریقت ابوالفضل حضرت اچھے میاں قدس سرہ سے خلافت واجازت حاصل تھی اور انہیں کے سلسلہ میں مریدفرماتے تھے ۔

اولاد امجاد میں دوصاحبزادے اور تین صاحبزادیاں تھیں ۔

۱۔ حضرت سید شاہ ظہور حسین بڑے میاں

۲۔ حضرت سیدشاہ ظہور حسن چھوٹے میاں

خلفاء کی تعداد کثیر ہے ،چند مشاہیر یہ ہیں: ۔

۱۔ سراج السالکین حضرت سیدشاہ ابوالحسین احمد نوری قدس سرہ( آپکے پوتے )

۲۔ مجد داعظم امام احمد رضا فاضل بریلوی قدس سرہ

۳۔ حضرت سید شاہ مہدی حسن میاں مارہروی

۴۔ تاجدار سلسلہ اشرفیہ حضرت شاہ علی حسین اشرفی میاں کچھوچھوی

آپ نے ۱۸؍ ذوالحجہ بروزچہار شنبہ مارہرہ مطہرہ میں وصال فرمایا ۔ مزار پرانوار خانقاہ برکاتیہ مارہرہ میں زیارت گاہ خاص وعام ہے ۔(تذکرہ مشائخ قادریہ)