یا شاہِ سنجری

یا شاہِ سنجری

بگڑی مِری بنا دو یا شاہِ سنجری

رنج و الم مٹا دو یا شاہِ سنجری

کتنا کرم ہے مجھ کو اپنا بنا لیاہے

قسمت مِری جگا دو یا شاہِ سنجری

پر ہے نہ پاس زر ہے بس آپ کی نظر ہے

طیبہ مجھے دکھا دو یا شاہِ سنجری

عشقِ نبی میں آقا ثابت قدم رہیں ہم

بالخیر خاتمہ ہو یا شاہِ سنجری

پھر ہند کی زمیں پر ظالم ابھر رہے ہیں

تیرِ نظر چلا دو یا شاہِ سنجری

تحریک سُنی دعوت اسلامی کو حضور

عالم میں اب چلا دو یا شاہِ سنجری

حسنِ عمل سے قاصر در پہ کھڑا ہے شاکرؔ

اپنا اِسے بنا لو یا شاہِ سنجری

شاکرؔ پہ بھی عنایت فرمائیے حضور

خوابیدہ دل جگا دو یا شاہِ سنجری

جواب دیجئے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.