شفاعت کا بیان

عقیدہ :قیامت کا دن پچاس ہزار برس کے برابر ہوگا اور آدھا دن تو انہی مصائب و تکالیف میں گزرے گا پھر اہل ایمان مشورہ کر کے کوئی سفارشی تلاش کریں گے جوان کو مصائب سے نجات دلائے ۔پہلے لوگ حضرت آدم علیہ السلام کے پاس حاضر ہو کر شفاعت کی درخواست کریں گے آپ فرمائیں گے ،میں اس کام کے لائق نہیں تم ابراہیم علیہ السلام کے پاس جاؤ وہ اللہ کے خلیل ہیں ،پس لوگ ابراہیم علیہ السلام کی خدمت میں حاضر ہوجائیں گے آپ فرمائیں گے ،میں اس کام کے لائق نہیں تم موسیٰ علیہ السلام کے پاس جاؤ ۔لوگ وہاں جائیں گے تو وہ بھی یہی جواب دیں گے اور عیسیٰ علیہ السلام کے پاس بھیج دیں گے وہ فرمائیں گے ،تم حضرت محمد ﷺکی خدمت میں میں جاؤ وہ ایسے خاص بندے ہیں کہ ان کے سبب اللہ تعالیٰ نے انکے اگلوں اور پچھلوں کے گناہ معاف فرمادئیے پھر سب لوگ حضور علیہ السلام کی بارگاہ میں حاضر ہونگے اور شفاعت کی درخواست کریں گے آقاعلیہ السلام فرمائیں گے ،میں اس کام کے لیے ہوں ،پھر آپ بارگاہ الہٰی میں سجدہ کریںگے ارشاد باری تعالیٰ ہوگا ،اے محمد ﷺ!سجدہ سے سر اٹھاؤ اور کہو تمہاری بات سنی جائے گی ،اور مانگو تمہیں عطا کیا جائے گا ،اور شفاعت کرو تمہاری شفاعت قبول کی جائے گی ‘‘۔(ازبخاری ،مسلم ،مشکوٰۃ )

آقا مولیٰ ﷺمقام محمود پر فائز کیے جائیں گے قرآن کریم میں ہے ’’قریب ہے کہ تمہیں تمہارا رب ایسی جگہ کھڑا کرے جہاں سب تمہاری حمد کریں ‘‘۔(بنی اسرائیل :۷۹)مقام محمود مقام شفاعت ہے آپ کو ایک جھنڈا عطا ہو گا جسے لواء الحمد کہتے ہیں،تمام اہل ایمان اسی جھنڈے کے نیچے جمع ہونگے اورحضور علیہ السلام کی حمد و ستائش کریں گے ۔

شافع محشر ﷺ کی ایک شفاعت تو تمام اہل محشر کے لیے ہے جو میدان حشر میں زیادہ دیر ٹھہر نے سے نجات اور حساب و کتاب شروع کرنے کے لیے ہوگی ۔آپ کی ایک شفاعت ایسی ہوگی جس سے بہت سے لوگ بلا حساب جنت میں داخل ہونگے جبکہ آپکی شفاعت سے جہنم کے مستحق بہت سے لوگ جہنم میں جانے سے بچ جائیں گے ۔آقاعلیہ السلام کی شفاعت سے بہت سے گناہگا رجہنم سے نکال کر جنت میں داخل کردیے جائیں گے نیز آ پکی شفاعت سے اہل جنت بھی فیض پائیں گے اور انکے درجات بلند کیے جائیں گے ۔حضور علیہ السلام کے بعد دیگر انبیاء کرام اپنی اپنی امتوں کی شفاعت فرمائیں گے پھر اولیائے کرام ،شہدا علماء حفاظ حجاج بلکہ ہر وہ شخص جو کوئی دینی منصب رکھتا ہو اپنے اپنے متعلقین کی شفاعت کرے گا ،فوت شدہ نا بالغ بچے اپنے ماں باپ کی شفاعت کریں گے اگر کسی نے علماء حق میں سے کسی کو دنیا میں وضو کے لیے پانی دیا ہو گا تو وہ بھی یاد دلاکر شفاعت کی درخواست کرے گا اور وہ اس کی شفاعت کریں گے ۔