أَعـوذُ بِاللهِ مِنَ الشَّيْـطانِ الرَّجيـم

بِسْمِ اللّٰهِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِيْمِ

فَـكُلُوۡا مِمَّا ذُكِرَ اسۡمُ اللّٰهِ عَلَيۡهِ اِنۡ كُنۡتُمۡ بِاٰيٰتِهٖ مُؤۡمِنِيۡنَ‏ ۞

ترجمہ:

اگر تم اللہ کی آیتوں پر ایمان رکھتے ہو تو اس ذبیحہ سے کھاؤ جس پر اللہ کا نام لیا گیا ہو۔

تفسیر:

اللہ تعالیٰ کا ارشاد ہے : اگر تم اللہ کی آیتوں پر ایمان رکھتے ہو تو اس ذبیحہ سے کھاؤ جس پر اللہ کا نام لیا گیا ہو۔ (الانعام : ١١٨) 

اللہ تعالیٰ اپنے نبی سیدنا محمد (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) اور مسلمانوں سے فرماتا ہے کہ تم اس جانور کا گوشت کھاؤ جس پر اللہ کا نام لیا گیا ہو ‘ اور مشرکین کی طرف توجہ نہ کرو جو مردار تو کھالیتے ہیں اور مسلمان جس جانور کو اللہ کے نام پر ذبح کرتے ہیں اس کا کھانا برا جانتے ہیں۔ 

امام ابوعیسی محمد بن عیسیٰ ترمذی متوفی ٢٧٩ ھ روایت کرتے ہیں : 

حضرت عبداللہ بن عباس (رض) بیان کرتے ہیں کہ نبی کریم (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کے پاس کچھ لوگوں نے آکر کہا یا رسول اللہ (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کیا ہم اس کو کھا لیں جس کو ہم نے قتل کیا ہے اور اس کو نہ کھائیں جس کو اللہ نے قتل کیا ہے ؟ تب اللہ تعالیٰ نے یہ آیت نازل فرمائی اگر تم اللہ کی آیتوں پر ایمان رکھتے ہو تو اس ذبیحہ سے کھاؤ جس پر اللہ کا نام لیا گیا ہو۔ 

(سنن ترمذی ‘ ج ٥‘ رقم الحدیث :‘ ٣٠٨٠‘ سنن ابو داؤد ‘ ج ٣‘ رقم الحدیث :‘ ٢٨١٩‘ سنن النسائی ‘ ج ٧‘ رقم الحدیث :‘ ٤٤٤٩‘ السنن الکبری للنسائی ‘ ج ٦‘ رقم الحدیث :‘ ١١١٧١) 

بعض علماء نے اس حدیث سے یہ استدلال کیا ہے کہ اگر مسلمان کسی جانور کو ذبح کرے اور اس پر بھول کر بسم اللہ نہ پڑھے تو اس کا کھانا بھی جائز نہیں ہے ‘ اور فقہاء احناف یہ کہتے ہیں کہ اگر مسلمان بھول کر بسم اللہ نہ پڑھے تو اس ذبیحہ کا کھانا جائز ہے۔ البتہ اگر وہ عمدا بسم اللہ پڑھنے کو ترک کر دے ‘ تو پھر اس ذبیحہ کو کھانا جائز نہیں ہے۔ اس کی تفصیلی بحث سورة الانعام : ١٢١‘ میں انشاء اللہ آئے گی۔ 

مشرکین یہ کہتے تھے کہ مسلمان خدا کے مارے ہوئے جانور کو حرام کہتے ہیں اور اپنے مارے ہوئے جانور کو حلال کہتے ہیں ‘ ان کا یہ قول حماقت پر مبنی تھا۔ کیونکہ دونوں جانوروں کو مارنے والا اللہ ہے۔ البتہ جو طبعی موت مرا ہے اس کی جان خدا کے نام پر نہیں نکلی اور جس جانور کو مسلمانوں نے اللہ کے نام پر ذبح کیا ہے ‘ اس کی جان خدا کے نام پر نکلی ہے۔

تبیان القرآن – سورۃ نمبر 6 الأنعام آیت نمبر 118