حدیث نمبر :589

روایت ہے حضرت جندب قسری سے فرماتے ہیں کہ فرمایا رسول اﷲ صلی اللہ علیہ وسلم نے کہ جوفجر کی نماز پڑھ لے وہ اﷲ کی امان میں ہے ۱؎ لہذا تم سے اﷲ اپنی امان کے بارے میں کچھ مواخذہ نہ کرے۲؎کیونکہ اﷲ تعالٰی جب کسی سے اپنے عہد کا مواخذہ کرے گا تو اسے پکڑلے گا پھر اسے اوندھے منہ دوزخ کی آگ میں ڈال دے گا(مسلم)اورمصابیح کے بعض نسخوں میں بجائے قسری کے قشیری ہے۔

شرح

۱؎ یعنی فجرکی نماز پڑھنے والا اﷲ کی امان میں ایساہوتاہے جیسے ڈیوٹی کا سپاہی حکومت کی امان میں کہ اس کی بے حرمتی حکومت کامقابلہ ہے۔خیال رہے کہ کلمہ کی امان اورقسم کی ہے اورنماز کی امان اورقسم کی،لہذا احادیث میں تعارض نہیں۔

۲؎ یعنی ایسا نہ ہوکہ تم نمازی کوستاؤ اورقیامت میں سلطنت الہیہ کے باغی بن کرپکڑے جاؤ۔