حدیث نمبر :616

روایت ہے حضرت ابوہریرہ سے فرماتے ہیں فرمایا نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے کہ جب نماز کی اذان دی جاتی ہے ۱؎ تو شیطان گوزمارتابھاگتا ہے حتی کہ اذان نہ سنے۲؎ پھرجب اذان ختم ہوجاتی ہے تو آجاتا ہے حتی کہ جب نماز کی تثویب کہی جاتی ہے تو بھاگ جاتاہے۳؎ جب تثویب ختم ہوجاتی ہے تو آجاتا ہے تاکہ انسان کے دل میں وسوسے ڈالے کہتا ہے فلاں فلاں چیزیں یادکر۴؎ وہ چیزیں جو اسے یاد نہ تھیں یہاں تک کہ آدمی نہیں جانتا کہ کتنی رکعت پڑھیں ۵؎ (مسلم،بخاری)

شرح

۱؎ خواہ نمازمیں بلانے کے لیے دی جائے یاکسی اورمقصد کے لئے،جیسے بچے کے کان میں یابعددفن قبر پر وغیرہ۔لِلصَّلوٰۃ اس لیے فرمایا تاکہ کوئی اذان کے لغوی معنی نہ سمجھ جائے۔

۲؎ یہاں بھاگنے کے ظاہری معنی ہی مرادہیں اوراذان میں دفع شیطان کی تاثیر ہے اسی لیے طاعون پھیلنے پر اذان کہلواتے ہیں کہ یہ وباءجنات کے اثرسے ہے۔بچے کے کان میں اذان دیتے ہیں کہ اس کی پیدائش پر شیطان موجودہوتاہے جس کی مار سے بچہ روتا ہے۔دفن کے بعدقبر کے سرہانے اذان دی جاتی ہے کیونکہ وہ میت کے امتحان اورشیطان کے بہکانے کا وقت ہے،اس کی برکت سے شیطان بھاگے گا،نیز میت کے دل کو سکون ہو گا،نئے گھر میں دل لگ جائے گا،نکیرین کے سوالات کے جوابات یاد آجائیں گے۔اس کی پوری تحقیق ہماری کتاب “جاء الحق”حصہ اول میں دیکھو۔گوز مارنے سے مراد اس کی انتہائی ذلت اورخوف ہے کہ ایسی حالت میں ڈرنے والاگوزمارتاہوا ہی بھاگاکرتاہے۔

۳؎ تثویب سے مراد اقامت یعنی تکبیر ہے اس میں بھی اذان کی طرح اثر ہے۔

۴؎ چیزوں سے مراد نماز سے غیرمتعلق خیالات ہیں،تجربہ ہے کہ نمازمیں وہ باتیں یادآتی ہیں جونمازکے باہر یادنہیں آتیں۔اس سے معلوم ہوا کہ اﷲ تعالٰی نے شیطان کو انسانوں کے دلوں پرتصرف کرنے کی قدرت دی ہے انسانوں کی آزمائش کے لئے،کتنی ہی کوشش کی جائے مگر ان وسوسوں سے کلی نجات نہیں ملتی۔چاہیئے کہ وسوسوں کی پرواہ نہ کرے نماز پڑھتا رہے،مکھیوں کی وجہ سے کھانا نہ چھوڑے۔

۵؎ مسئلۂ فقہی یہ ہے کہ اگرپہلی بار یہ واقعہ پیش آئے تونئے سرے سے نماز پڑھے اوراگر آتا رہتا ہوتوکم رکعتوں کا لحاظ کرے،مثلًا اگرشبہ ہوگیا کہ چار پڑھیں یا تین تو تین مانے۔اس حدیث سے معلوم ہوا کہ کبھی افضل سے مفضول کی تاثیر بڑھ جاتی ہے۔دیکھونماز،تلاوت قرآن اوررکوع اورسجودسے شیطان نہیں بھاگتا۔بھاگتا ہے تو اذان سے حالانکہ اذان سے نمازافضل ہے،حضورفرماتے ہیں کہ عمرسے شیطان بھاگتاہے حالانکہ ابوبکرصدیق افضل ہیں۔