حدیث نمبر :617

روایت ہے حضرت ابوسعیدخدری سے فرماتے ہیں فرمایا نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے کہ مؤذن کی انتہائی آوازکوکوئی جن و انس اور دوسری چیزیں نہیں سنتیں مگر قیامت کے دن اس کی گواہی دیں گی ۱؎ (بخاری)

شرح

۱؎ عرض کریں گے کہ مولے ٰیہ مسلمان ہے،نمازی ہے،ہم نے اسے اذان دیتے دیکھا،اورکلمۂ شہادت پڑھتے سنا۔حدیث بالکل ظاہری معنی پرہے کسی قسم کی تاویل کی ضرورت نہیں۔اﷲ تعالٰی نے حیوانات،جمادات کو سمجھ گویائی سننے کی طاقتیں بخشیں ہیں،ان میں سے ہر ایک کا ثبوت قرآن کریم کی صریح آیات سے ہے۔مرقاۃ میں اس جگہ ایک حدیث منقول ہے کہ روزانہ شام کے وقت پہاڑ ایک دوسرے سے پوچھتے ہیں کہ کیاتجھ پرکوئی اﷲ کا ذکرکرنے والابھی گزرا،جب ان میں سے کوئی کہتاہے ہاں توسب خوش ہوتے ہیں۔چاہیئے کہ اذان بلند آوازسے دی جائے تاکہ گواہ زیادہ میسر ہوں غالبًا جن میں فرشتے بھی داخل ہیں اور انسان سے عام انسان مرادہیں۔