شفائِ امراض کیلئے

روایت ہے کہ حضرت عبدالعزیز بن صُہیب اور حضرت ثابت بُنانی رضی اللہ عنہما دونوں حضرت انس صحابی رضی اللہ تعالی عنہ کی خدمت میں حاضر ہوئے اور ثابت بُنانی نے عرض کیا کہ اے ابوحمزہ (انس) میں بیمار ہوگیا ہوں، حضرت انس رضی اللہ تعالیٰ عنہ نے فرمایا کیا میں اس دعا سے تمہارے مرض کا جھاڑ پھوٗنک نہ کر دوں جس دعاء سے حضورﷺ مریضوں پر شفاء کے لئے دم فرمایا کرتے تھے۔ حضرت ثابت بُنانی نے کہاکیوں نہیں؟ اس کے بعد حضرت انس رضی اللہ تعالیٰ عنہ نے یہ دعاء پڑھی ’’اَللّٰہُمَّ رَبَّ النَّاسِ مُذْہِبَ الْبَأْسِ اِشْفِ اَنْتَ الشَّافِی لاَ شَافِیَ اِلَّا اَنْتَ شِفَائً لَّا یُغَادِرُ سَقَماً‘‘