ستم ہائے روزگار کے شکوہ کناں مسلم ! ذرا سن !

وَمِنَ النَّاسِ مَن يَقُولُ آمَنَّا بِاللَّهِ فَإِذَا أُوذِيَ فِي اللَّهِ جَعَلَ فِتْنَةَ النَّاسِ كَعَذَابِ اللَّهِ .

( سورة العنكبوت 10 )

اور کچھ ایسے لوگ بھی ہیں جو کہتے ہیں ” ہم اللہ پر ایمان رکھتے ہیں ” پھر جب اللہ ( کے دین ) میں ایذاء دیئے جاتے ہیں تو لوگوں کے اس فتنہ کو عذاب الہی جیسا سمجھ لیتے ہیں ۔

درج بالا آیت مبارکہ دینی خدمت کے شب و روز میں اکثر اس بے مایہ فقیر خالد محمود کی نگاہوں کے سامنے آ کر سامان تسلی بنتی رہتی ہے ۔

اقبال عليه الرحمة بھی کہہ بیٹھے ۔

چو می گویم مسلمانم بلرزم

کہ دانم مشکلاتِ لا الہ را

عطا رامپوری اس کا ترجمہ یوں کر گئے ہیں:

’’کانپنے لگتا ہو ﮞ کہتے ہوئے مسلم خود كو

كہ تقاضے مجھے ایمان کے معلوم ہیں سب‘‘

اور یہ بھی تو اقبال ہی نے کہا ہے : ’’یہ شہادت گہہ الفت میں قدم رکھنا ہے

لوگ آسان سمجھتے ہیں مسلماں ہونا‘

🌷اپنی اور آپ سب کی تسلی ، حوصلہ افزائی کے لیئے چند قابل غور باتیں

*رسول الله صلى الله عليه و على آله و اصحابه و بارك و سلم کے والد ماجد آپ کی ولادت سے قبل وفات پاگئے ۔ 6 برس کے لگ بھگ عمر شریف ہوئی تو والدہ ماجدہ داغ مفارقت دے گئیں ۔ دادا نے پرورش کی ذمہ داری سنبھالی تو وہ بھی دو برس کے بعد وفات پا گئے ۔ اور چچا ابو طالب نے اپنے دامن شفقت میں لے تو لیا لیکن مالی طور پر کمزور اور کثیر العیال تھے ۔ گذر بسر کی مشکلات تھیں !

کیا یہ صورتحال ہمیں پیش آئی ؟

*رسول الله صلی اللہ علیہ وسلم کی دو صاحبزادیوں کو طلاق دی گئی ۔ !!

اللہ نہ کرے کہ ہم میں سے کسی کو یہ دن دیکھنا پڑیں ؟

*رسول الله صلى الله عليه و على آله و اصحابه و بارك و سلم کی باستثناء سيدة فاطمة رضی اللہ تبارک و تعالی عنھا کے علاوہ باقی تمام اولاد آپ صلی اللہ علیہ وسلم کی ظاہری حیات مبارکہ میں آپ کی آنکھوں کے سامنے فوت ہو گئی !!

کتنے ہم میں سے ایسے ہیں ؟

*کیا ایسی توہین و بے عزتی سے دوچار ہونا پڑا ؟

رسول الله صلى الله عليه و على آله و اصحابه و بارك و سلم کو نازیبا باتیں سننا پڑیں ، سر اقدس سجدہ میں تھا کہ بد بخت ترین انسان عقبہ نے اونٹ کی گلی سڑی اوجھڑی لا کر پشت مبارک جس پر مہر نبوت بھی تھی لا کر رکھ دی ۔ سر اقدس اٹھانے کی کوششیں رائیگاں جا رہی ہیں اور ان حرکات کو دیکھ کر کچھ دور بیٹھے مشرکین ہنس ہنس کر لوٹ پوٹ ہو رہے ہیں ۔

رسول الله صلى الله عليه و على آله و اصحابه و بارك و سلم کو آپ کی قوم نے جھوٹا ، جادوگر ، مجنون ، کہانیاں تراشنےوالا کہا !!

رسول الله صلی اللہ علیہ وسلم کے پیچھے اوباش چھوکرے مامور کیئے گئے ۔ جنھوں نے یاوہ گوئی کے ساتھ اتنے پتھر برسائے کہ خون بہہ بہہ کر نعلین مقدسین میں جا کر جم گیا ۔ نازنین قدم مبارک مشکل سے نکالے گئے ۔

*کیا آپ کا کبھی سوشل بائیکاٹ کیا گیا ہے ؟

رسول الله صلى الله عليه و على آله و اصحابه و بارك و سلم پورے 3 سال پہاڑوں کی ایک گھاٹی میں محصور رہے ۔ فقیر دعوی سے کہتا ہے کہ اس عرصہ کی تکالیف کی مثال تاریخ انسانی پیش کرنے سے قاصر ہے ۔

*قتل کر دیئے جانے کی کتنی کوششوں سے آپ کو پالا پڑا ؟

رسول الله صلی اللہ علیہ وسلم کو يهود و مشركين نے بارہا شہید کرنے کی کوششیں کیں

*آپ کو ہجرت کے عذاب سہنا پڑے

اور ہم وطنوں نے اس قدر تنگ کیا کہ گھر بار چھوڑنا پڑے ؟

رسول الله صلى الله عليه و على آله و اصحابه و بارك و سلم اور آپ کے صحابہ کرام رضوان الله تعالى عليهم أجمعين کو مکہ کے لوگوں نے ننگ انسانیت ایذائیں دیں یہاں تک کہ اپنا سب کچھ چھوڑ کر ہجرت کرنا پڑی ۔ !

*کیا آپ کو پیاری اہلیہ کی عزت کی تہمت کا سامنا کرنا پڑا ہے ؟

رسول الله صلى الله عليه و على آله و اصحابه و بارك و سلم کو آپ صلی اللہ علیہ وسلم کو سب سے بڑھ کر پیاری شریک حیات سیدہ

عائشة رضي الله عنها پر تہمت کو برداشت کرنا پڑا ۔ بالآخر اللہ تبارک و تعالی نے آپ کی براءت کے لیئے سورة النور میں دس آیات نازل فرمائیں ۔

!!!!*ہم پر یہ کیفیت تو نہیں آئی ؟

بوقت وصال رسول الله صلى الله عليه و على آله و اصحابه و بارك و سلم کی زرہ ایک یہودی کے پاس رہن رکھی ہوئی تھی ۔

اللہ تبارک و تعالی کے محبوب رسول پر کئی ماہ ایسے گذر جاتے کہ چولھا ہی روشن نہ ہوتا ۔ !

*رسول الله صلى الله عليه و على آله و اصحابه و بارك و سلم کے قدم مبارک میں طول قيام کی وجہ سے چیر آ جاتے ، پنڈلیوں پر ورم آ جاتا ۔ دیکھنے والوں کو ترس آ جاتا !

کبھی ایسی عبادت ہم نے بھی کی ؟

*رسول الله صلی اللہ علیہ وسلم کو تمام انسانوں کے لیئے بشیر و نذیر رسول بنا کر بھیجا گیا !!

ایسی ذمہ داری ہمیں تو نہیں سونپی گئی ؟

💚 تو اپنی تمام مبارک زندگی میں آپ صلى الله عليه و على آله و اصحابه و بارك و سلم سراپا صبر و شکر و تسلیم و رضا کا پیکر بن کر رہے ۔

✅ اور ہاں فقیر یہ یاد دہانی بھی کرائے دیتا ہے کہ آپ صلى الله عليه و على آله و اصحابه و بارك و سلم کی اسی زندگی کو ہم سب کے اللہ نے ہم سب کے لیئے أسوة حسنة بنایا اور بتایا ہے ۔

✒ از قلم شیخ الحدیث و التفسیر حضرت مولانا مفتی خالد محمود صاحب مہتمم ادارہ معارف القران کشمیر کالونی کراچی خادم جامع مسجد حضرت سیدہ خدیجہ الکبری رضی اللہ تعالی عنہا مصطفی آباد پھالیہ منڈی روڈ منڈی بہاؤالدین