نعت شریف

…………مولانا ذاکر بلرامپوری علیمیہ جمداشاہی بستی٭

ملے عشق نبی کا غم تو اپنی ہرخوشی دے دوں

مدینے کی زمیں مل جائے تو میں زندگی دے دوں

قدم میرے بھلا کیسے اٹھیں گے راہ طیبہ میں

چلوں گا سر کے بل تاکہ ثبوت زندگی دے دوں

کہیں شجرہ کوئی اسلام کا تاکہ نہ مرجھائے

تمنا ہے حفاظت کے لئے خوں کی نمی دے دوں

خدا کی راہ میں سب کچھ نچھاور کر دیا جس نے

ملے صدیق سا جذبہ !کہ جان و تن سبھی دے دوں

مراد زندگی ذاکر ؔہماری ہے فقط اتنی

تیری چوکھٹ کے سجدے سے جبیں کو روشنی دے دوں