حدیث نمبر :644

روایت ہے انہیں سے فرماتے ہیں کہ ہم سے رسول اﷲ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا تم ویسے ہی نماز پڑھو جیسے مجھے پڑھتے دیکھا ۱؎ جب نماز حاضرہوتو تم میں سے کوئی اذان دے اورتم میں کا بڑا امامت کرے ۲؎ (مسلم،بخاری)

شرح

۱؎ سبحان اﷲ!کیسا ایمان افروزکلمہ ہے یعنی میں اورمیرے افعال قرآن کی بولتی ہوئی تفسیر ہیں۔رب نے صرف نماز کا حکم دیا،طریقۂ ادا نہ بتایا۔فرمایا جارہا ہے”اَقِیۡمُوا الصَّلٰوۃَ”کی تفسیرمیں ہوں اورمیرا عمل۔سارے قرآن کایہی حال ہے۔

ع تری سیرت کو ہم قرآن کی تفسیر کہتے ہیں۔

۲؎ یعنی اذان ونماز دونوں وقت میں ہوں،لہذاکوئی اذان وقت سے پہلے جائزنہیں(حنفی)۔اکبرکی تفسیرابھی گزر چکی۔