روٹی روزی کا یقینی بندوبست ۔

———————-

🌲اللَّهُمَّ إِنِّي أَسْأَلُكَ مِنْ فَضْلِكَ وَرَحْمَتِكَ،

🕌 یہ دعا مساجد کے دروازوں پر تحریر ہوتی ہے اور عمومی طور پر اسے مسجد سے باہر آنے کی دعا کے طور پر ذکر کیا جاتا ہے ۔

فقیر خالد محمود آپ سے التماس گذار ہے کہ یہ فقیر آپ کی خدمت میں قرآن مجید اور احادیث مبارکہ سے انتخاب کر کے جو تحائف پیش کرنے کی سعادتیں سمیٹتا یے ، ان کو اپنا معمول بنا لیں ۔

❤ آئیے !

اس دعا کے بارے میں حضرت سیدنا عبد اللہ بن مسعود رضى الله تعالى عنه و ارضاه عنا کی یہ روایت پڑھیئے : ضَافَ النَّبِيُّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ، فَأَرْسَلَ إِلَى أَزْوَاجِهِ يَبْتَغِي عِنْدَهُنَّ طَعَامًا، فَلَمْ يَجِدْ عِنْدَ وَاحِدَةٍ مِنْهُنَّ،

اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم کے پاس ایک اعرابی بطور مہمان آئے ۔ ( انہوں نے آ کر کھانا مانگا ) تو اللہ کے رسول نے باری باری تمام ازواج مطھرات سے پتہ کروایا ، کہیں سے بھی کچھ نہ ملا تو آپ صلى الله عليه و على آله و اصحابه و بارك و سلم نے فرمایا ۔:

🌲اللَّهُمَّ إِنِّي أَسْأَلُكَ مِنْ فَضْلِكَ وَرَحْمَتِكَ، فَإِنَّهُ لا يَمْلِكُهَا إِلا أَنْتَ ۔

☆ تو ایک بھنی ہوئی بکری آپ صلى الله عليه و على آله و اصحابه و بارك و سلم کی جناب میں ہدیہ پیش کی گئی ( اور ایک روایت میں ہے کہ ایک اور صاحب نے ستوؤں کا پیالہ پیش کیا )۔

تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا :

🌲هَذِهِ مِنْ فَضْلِ اللَّهِ، وَنَحْنُ نَنْتَظِرُ الرَّحْمَةَ ۔

یہ اللہ کا فضل ہے اور ہم ابھی رحمت کے منتظر ہیں ۔

{ فقیر خالد محمود عرض گذار ہے کہ ذرا غور فرمائیں کہ بھنی ہوئی بکری اور ستو کا پیالہ سب کچھ تیار ملا ہے ، کچھ پکانا وغیرہ تردد نہیں اور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم فرما رہے ہیں کہ یہ فضل ہے ، رحمت کا ابھی انتظار ہے }

📗 طبراني کی الكبير، وابن أبي شيبة کی المصنف ، و بيهقى کی دلائل النبوة ، الهيثمي کی مجمع الزوائد،

الألباني کی السلسلة الصحيحة اور صحيح الجامع،

👈 ہاں ہاں دوستو مزے کی بات تو یہ ہے کہ جب ان مہمان محترم ( کیا بلند بخت ترین لوگ ہیں جو اس رؤف و رحيم ، رحمة للعالمينﷺ کے مہمان، میزبان اور مہمانوں کے میزبان ہوآ کرتے )

ان کا پیٹ بھر گیا تو عرض کیا [تو اپنا اور تا قیامت ہم جیسوں کی روٹی پانی کا بند و بست کر دیا* ]

یا رسول اللہ ۔ ابھی تو مجھے بھوک پیاس نے ستایا تو میں آپ کے پاس آ گیا ، یہ سب کچھ مل گیا لیکن یا رسول اللہ! ایسی صورت حال پھر بن جائے اور آپ نہ ہوں تو

( دوستو ! قربان اپنے رسول کی شان کے ، کوئی عذر، کمزوری ، عدم اختیار کی بات نہیں کی )

فرمایا ! کہنا

🌲اللَّهُمَّ إِنِّي أَسْأَلُكَ مِنْ فَضْلِكَ وَرَحْمَتِكَ، فَإِنَّهُ لا يَمْلِكُهَا إِلا أَنْتَ ۔

دوستو ، یاد کر لو ، کہو

🌲اللَّهُمَّ إِنِّي أَسْأَلُكَ مِنْ فَضْلِكَ وَرَحْمَتِكَ، فَإِنَّهُ لا يَمْلِكُهَا إِلا أَنْتَ ۔

بشکریہ شیخ الحدیث مفتی خالد محمود صاحب مہتمم ادارہ معارف القران