ربیع الاول شریف اور مژدہ آزادی

جملہ اہل ایمان کو ربیع الاول شریف کی بہت بہت مبارک

اللہ تعالی اپنے نبی صلی اللہ علیہ وسلم کو امت کے بارے میں تسلی دیتے ہوئے ارشادفرماتا ہے

وَ لَسَوۡفَ یُعۡطِیۡکَ رَبُّکَ فَتَرۡضٰی ؕ﴿۵﴾

اور بیشک قریب ہے کہ تمہارا رب تمہیں اتنا دے گا کہ تم راضی ہوجاؤ گے…

اور نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم ارشاد فرماتے ہیں

اللہ مجھے اذن شفاعت عطا کرے گا میں سجدے میں گر جاؤں گا…

بخاری شریف کے الفاظ ہیں

فَأَسْجُدُ تَحْتَ الْعَرْشِ ، فَيُقَالُ : يَا مُحَمَّدُ ارْفَعْ رَأْسَكَ وَاشْفَعْ تُشَفَّعْ وَسَلْ تُعْطَهْ…

میں ( ان کی شفاعت کے لیے ) عرش کے نیچے سجدے میں گر پڑوں گا۔ پھر آواز آئے گی، اے محمد صلی اللہ علیہ وسلم ! سر اٹھاؤ اور شفاعت کرو، آپ کی شفاعت قبول کی جائے گی۔ مانگو تمہیں دیا جائے گا۔اب میں اپنا سر اٹھاؤں گا اور عرض کروں گا۔ اے میرے رب! میری امت، اے میرے رب! میری امت پر کرم کر،……

آپ کو جو مقام حاصل ہوگا وہ مقام محمود ہوگا مقامِ محمود ہی مقام رضا ہے…..

امید ہے رسول کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی رضا امت کی بخشش و نجات میں ہو گی، اور اللہ بھی یقینا اپنے محبوب صلی اللہ علیہ وسلم کو راضی کرے گا….

یہی وہ جہنم سے آزادی ہے، جو ہمیں میں میلاد مصطفی صلی اللہ علیہ وسلم کی خوشی منانے پر آمادہ کرتی ہے…

اگر دیکھا جائے

پوری دنیا کا ہر ہر ملک آزادی کا دن مناتا ہے…

مثلاً ! اٹلی festa della libertà 25 aprile

پاکستان میں 14 اگست کو

اور مومن کا یوم آزادی 12 ربیع الاول جس دن علان ہوا

اے مسلمان !

اللہ نے ہمیں. جہنم سے آزادی عطا کی ہے تو اس کی خوشی کیوں نہ منائیں

بڑی آزادی تو جہنم سے آزادی ہے…

لیکن یہ بات بھی یاد رہے

اپنی آزادی کا دفاع بھی کرنا پڑتا ہے، عمل سے، کردار سے، سرحدوں کی حفاظت کر کے، اپنی سرحدوں پر پہرا دے کر، غداروں کی نشاندہی کرکے. وغیرہ وغیرہ

اسی طرح جہنم سے آزادی کا اعلان تو ہوا ہے، لیکن اس کا بھی دفاع کرنا پڑتا ہے اللہ کی حدود کی پاسداری کر کے اپنے عمل اور کردار سے مسلمان بن کے، اسلام کے غداروں پر نظر رکھ کے…

تحریر : _. محمد یعقوب نقشبندی اٹلی