الصلوۃ والسلام علیک یارسول اللہ ﷺ

وعلیٰ آلک و اصحابک یا حبیب اللہ ﷺ

نماز کا بیان

اسلام کی بنیاد پانچ ارکان پر ہے۔ اس بات کی گواہی دینا کہ اللہد کے سوا کوئی معبود نہیں اور محمد االلہ  کے رسول ہیں؛نماز قائم کرنا؛ رمضان المبارک کے روزے رکھنا ، زکوٰۃ ادا کرنا اور حجِّ بیت اللہ کرنا ۔ (الحدیث)

میرے پیارے آقا ﷺ کے پیارے دیوانو! اللہ اور اس کے حبیب ﷺ پر ایمان لانے کے بعد ایک مومن پر سب سے اہم عبادت نماز ہے ۔ آئیے نماز کے متعلق قرآنِ مقدس میں اللہ کے وہ ارشادات پڑھیں جن کو پڑھ کر ہمارے دلوں میں نماز کی عظمت و محبت اور اس کی ادائیگی کا جذبہ پیدا ہو ۔ قرآنِ مقدس میں بے شمار مقامات پر نماز کے قائم کرنے کا حکم دیا گیا ہے ۔ چنانچہ سورئہ بقرہ کی ابتدائی آیت میں اللہ  نے ارشاد فرمایا: ’’ ذٰلِکَ الْکِتَابُ لَا رَیْبَ فِیْہِ ، ھُدًی لِّلْمُتَّقِیْنَ الَّذِیْنَ یُومِنُونَ ِبالْغَیْبِ وَیُقِیْمُوْنَ الصَّلٰوۃَ وَ مِمَّا رَزَقْنَاھُمْ یُنْفِقُوْنَ‘‘ ( سورئہ بقرہ ع۱)

ترجمہ :۔وہ بلند رتبہ کتاب ( قرآن ) کوئی شک کی جگہ نہیں ،ا س میں ہدایت ہے ڈر والوں کو وہ جوبِن دیکھے ایمان لائیںاور نماز قائم رکھیںاور ہماری دی ہوئی روزی میں سے ہماری راہ میں اٹھائیں ۔ ( کنز الا یما ن)

میرے پیارے آقا ﷺ کے پیارے دیوانو!قرآنِ مقدس جو پر ہیزگاروں کے لئے ہدایت ہے اسی قرآنِ مقدس نے پرہیزگاروں کی صفات بھی بیان فرمادی ہے ، جس میں سے سب سے اہم صفت ’’ نماز قائم ‘‘کرناہے ۔ یاد رکھیں کہ نماز افضل العبادات ہے اور کوئی چاہے کتنا ہی پر ہیزگار ہونے کا دعویٰ کرتا ہو اگر و ہ نماز کا پابند نہیں تو وہ ہر گز ہر گز متقی ،پرہیزگا ر اور اللہ کا ولی نہیں ہوسکتا۔ جتنے بھی انبیاء کرام علیہم السلام ، نیز اولیائِ کرام تشریف لائے و ہ سب نماز کے پابند رہے اور نماز کی دعوت بھی دیتے رہے ۔ جیسا کہ قرآنِ مقدس کی دوسری آیتوں سے واضح ہے ۔ آج نماز ہی کے معاملے میںیہ قوم کاہل ( سست ) بن گئی ہے ۔ کا ش ! قومِ مسلم قرآن و حدیث کا مطالعہ کرے توانہیں معلوم ہو ،کہ نماز کے ادا کرنے پر اللہ د کی جانب سے کیا انعام ہے اور نماز کے چھوڑ دینے پر کیسی سخت سزائیں ہیں ؟ اللہ ہم سب کو نماز قائم رکھنے کی توفیق عطا فرمائے ۔ آمین بجاہ النبی الکریم علیہ افضل الصلوٰۃ والتسلیم