حدیث نمبر :656

روایت حضرت ابوہریرہ سے فرماتے ہیں فرمایا رسول اﷲ صلی اللہ علیہ وسلم نے آبادیوں میں رب کو پیاری جگہ مسجدیں ہیں اور بدترین جگہ وہاں کے بازارہیں ۱؎(مسلم)

شرح

۱؎ کیونکہ مسجدوں میں اکثر ذکر اﷲ کے لیےحاضری ہوتی ہے اوربازاروں میں اکثرجھوٹ،فریب،غیبت وغیرہ،اگرچہ کبھی مسجدوں میں بھی جوتی چور اوربازاروں میں بھی اولیاءاﷲ چلے جاتے ہیں اسی لیےفرمایا گیا کہ تم ان لوگوں میں سے ہونا کہ جن کا جسم بازار میں اور دل مسجد میں ہے،ان میں سے نہ ہوجن کاجسم مسجد میں اور دل بازارمیں ہو۔خیال رہے کہ یہاں شہروں سے مراد عام شہر ہیں۔مدینہ منورہ اور مکہ مکرمہ ان سے علیحدہ ہیں۔وہاں کے تو گلی کوچے بازار وغیرہ سب خداکو پیارے،رب تعالٰی فرماتا ہے:”وَ ہٰذَا الْبَلَدِ الْاَمِیۡنِ”اورفرماتا ہے:”لَاۤ اُقْسِمُ بِہٰذَا الْبَلَدِ”۔کیوں نہ ہو کہ یہ محبوب کی نگریاں ہیں ؎

کھائی قرآن نے خاک گزر کی قسم اس کف پاءکی حرمت پہ لاکھوں سلام