صاحب اقتدار کی ذمہ داری

 صاحب اقتدار کی ذمہ داری

اللہ قرآ ن ِعظیم میں بندوں کی ذمہ داریا ں بیان کرتے ہوئے ارشاد فرماتا ہے: ’’اَلَّذِیْنَ اِنْ مَّکَّنّٰھُمْ فِیْ الْاَرْضِ اَقَامُوْا الصَّلٰوۃَ وَ آتَوُ ا الزَّکٰوۃَ وَ اَمَرُوْا بِالْمَعْرُوْفِ وَنَھَوْا عَنِ الْمُنْکَرِ ( پ۱۷ رکوع ۱۳)

ترجمہ : ۔وہ لوگ کہ اگر ہم انہیں زمین میں قابو دیں تو نماز برپا رکھیں اور زکوۃ دیں اور بھلائی کا حکم کریں اور برائی سے روکیں ۔ (کنز الایمان)

میرے پیارے آقاﷺ کے پیارے دیوانو! اس آیتِ کریمہ میں اللہ نے اربابِ اقتدار کی ذمہ داریوں کو بیان فرمایا ہے کہ صاحب اقتدار کی سب سے اہم ذمہ داری یہ ہے کہ وہ سب سے پہلے’’ اقا مت ِصلوۃ ‘‘کانظام قائم کریں ۔ اس لئے کہ نماز ایک ایسی عبادت ہے جس میں ہر قسم کی تربیت موجود ہے ۔ وقت کی پابندی ، صف بندی، صفائی ، اتباع اور پیروی وغیرہ۔ نماز کے ذریعہ جہاں روحانی سکون ملتا ہے وہیں اسکے ذریعہ اچھی ورزش بھی ہوجاتی ہے ۔ اللہ ہم سب کو اقامتِ صلوۃ کا جذبہ عطا فرمائے ۔ آمین بجاہ النبی الکریم علیہ افضل الصلوٰۃ والتسلیم

جواب دیجئے

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.