نمازاور گناہوں کی مغفرت

حضرت ابو مسلم رضی اللہ تعالیٰ عنہ کہتے ہیں کہ میں حضرت ابو اُمامہ رضی اللہ تعالیٰ عنہ کی خدمت میں حاضر ہوا وہ مسجد میں تشریف فرماتھے میں نے عرض کیا کہ مجھ سے ایک شخص نے آپ کی طرف سے یہ حدیث نقل کی ہے کہ آپ نے نبیٔ اکرم ﷺ سے یہ ارشاد سنا ہے جو شخص اچھی طرح وضو کرے ،اور پھرفرض نماز پڑھے توحق تعالیٰ اس دن وہ گناہ جو چلنے سے ہوئے ہوں اور وہ گناہ جن کو اس کے ہاتھوں نے کیا ہو اوروہ گناہ جواس کے کانوں سے صادرہوئے ہوں اور وہ گناہ جن کو اس کی آنکھوں نے کیا ہو اوروہ گناہ جواس کے دل میں پیدا ہوئے ہوں سب معاف فرمادیتاہے ۔حضرت ابواُمامہ رضی اللہ تعالیٰ عنہ نے فرمایا کہ میں نے یہ مضمون نبی کریم ﷺ سے کئی دفعہ سنا ہے۔(احمد)

میرے پیارے آقا ﷺ کے پیارے دیوانو ! ہم بشر ہیں اور ہم سے گناہ ہونا ممکن ہے ۔ اورآج کے اس پر فتن ماحول میں جہاں گناہوں کا سیلاب پورے معاشرے کو اپنی لپیٹ میں لے چکاہے ، جہاں راہ چلنے سے لے کر کسی قسم کی تقریب میں شریک ہونے تک آوارگی، بد تمیزی ، بے حیائی سب کچھ موجود ہے ، ایسے میں گناہ سے دامن کو بچانا نہایت ہی مشکل ہے ۔ اللہ کریم ہے اپنے بندوں کی کمزوری کو جانتا ہے ۔ لہٰذا فرمایا : دن میں پانچ مرتبہ میری بارگاہ میں حاضر ہو جاؤمیں کریم ہوں۔ تم عاجزی سے بندگی بجا لاؤ ، میں طاقت والا رب تمہارے گناہوں کو معاف کر دوں گا ۔

خدارا ! خدارا ! میرے پیارے آقا ﷺ کے پیارے دیوانو! اپنے رب کی بارگاہ میں سر جھکانے میں کوتاہی نہ کرو ۔ پابندی سے نماز پڑھو ضرور اللہ کرم فرمائے گا ۔ پروردگارِ عالم د ہم سب کو نماز کی پابندی کرنے کی توفیق عطا فرمائے ۔آمین بجاہ النبی الکریم علیہ افضل الصلوٰۃ والتسلیم