*🌹رسول الله اور یوم میلاد🌹*

حضرت ابو قتادة الأنصاری رضی الله عنه سے روایت ہے :

نبی صلى الله عليه و على آله و اصحابه و بارك و سلم سے پیر کے دن روزہ رکھنے کا سبب پوچھا گیا ؟

تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے جواب فرمایا

*🌷ذلك يوم ولدت فيه🌷*

📗 مسلم(١١٦٢)

یہ وہ دن ہے جس میں ، میں پیدا کیا گیا ہوں ۔

🔎 فقیر خالد محمود عرض گذار ہے کہ ذرا اس جملہ کی ساخت پر غور فرمائیں ۔

اللہ تبارک و تعالی کے رسول نے یہ نہیں فرمایا

هذا يوم ميلادي یا اس طرح کا جملہ جو یہ مفہوم دے کہ یہ میری پیدائش کا دن ہے ۔

بلکہ جملہ ایسا فرمایا جو اس دن کی خاص بات ، اس بات کی وجہ سے پیدا شدہ خصوصی عظمت اور اس دن کو مستقل و مسلسل ہفتہ وارانہ بنیادوں پر یاد رکھنے اور اس دن کو بسر کرنے کے انداز کی تعلیم پر مشتمل ہے ۔

☘ اہل فن کی خدمت میں چند اشارے پیش ہیں

یوم : نکرہ ہے اور موصوف

ولدت فيه پورا جملہ اس کی صفت ۔

جملہ فعلیہ اور فعل بھی مالم يسم فاعله ۔

صفت اپنے موصوف کی چند کیفیات کا بیان ہوتی ہے

اس فعل مجہول سے اس صفت کی نسبت ذات باری تعالی کی طرف چلی گئی