اللہ اور رسول کی اطاعت

اللہ کے قانون اور اسکے فرمان کے معلوم کرنے کے ہمارے پاس دو طریقے ہیں،ایک قراٰن مجید اور دوسرا نبی ﷺ کی مقدس حدیثیں،فرمانے خدا وحیٗ متلو سے قراٰن بنتا ہے اور وحیٗ غیر متلو سے حدیث پاک رسول ،اور اللہ تبارک و تعالیٰ نے بھی فرمایا کہ

یآ ایھا الذین اٰمنوا اطیعوااللہ و اطیعوا الرسول اے ایمان والو ! اطاعت کرو اللہ کی اور اطاعت کرہ اسکے رسول کی

اور فرماتا ہے

من یطیع الرسول فقد اطاع اللہ جو رسول کی اطاعت کرے گا وہ ضرور اللہ کی اطاعت کر چکا،

اور فرماتا ہے

مااٰتاکم الرسول فخذوہ وما نھاکم عنھ فانتھوا ،رسول جو کچھ دیں تو وہ تم لو اور رسول تمہیں جس سے روکیں تو تم اس سے رک جاؤ

اس لئے کہ

ما ینطق عن الھویٰ ان ھو الا وحی یوحیٰ ،وہ خواہش نفس سے نہیں بولتے،وہ نہیں ہے مگر وحی جو آپکو کیجاتی ہے

اور فرماتا ہے

ومن یطیع اللہ والرسول فقد فاز فازا عظیما،جو اللہ اور رسول کی اطاعت کرتا ہے تو وہ عظیم کامیابی پا چکا

اور فرماتا ہے 

اطیعوا اللہ و الرسول لعلکم تفلحون، اللہ اور رسول کی اطاعت کرو یقینا تم کامیاب ہو جاؤگے

جب ہمنے اپنی چاہت کے بنائے ہوئے قانون کا نقصان جان لیا تو اس کے سوا کوئی راستہ نہ رہا کہ ہم اللہ اور اسکے رسول کے فرمان کو اپنا کر کامیابی کی ضمانت پالیں

محمد کی غلامی ہے سند آزاد ہونے کی ۔ خداکے دامن توحید میں آباد ہونے کی 

دنیا کی زندگی میں سکون اور چین اسی وقت حاصل ہو سکتا ہے کہ معاشرہ کے تمامی افراد اپنی طرف سے دوسریوںکے حقوق کو نبھائیں،اور کسی کو کسی سے کوئی شکایت نہ رہے،اوریہ بھی جاننے کی کوشش کرنی چاہیئے کہ جو دوسرے سے جتنا قریب ہوگا اسکے حقوق بھی اتنے ہی زیادہ ہونگے،تو اس طرح حقوق کی اہمیتوں کا اندازہ بھی لگ جائے گا ، اور کس کی بات کو کس کی بات پر ترجیح دیجائے گی وہ بھی معلوم ہو جائے گا