رسول اللہ ﷺ نے ارشاد فرمایا : جو شخص وضو کر کے فجر کی ادائیگی کے لئے آیا اور دو رکعت سنت پڑھ کر نماز با جماعت کے انتظار میں محوِ ذکر رہا تو اس کی نماز ابرار کی سی نمازہو جائے گی ۔ اور اس کا نام رحمانی قاصدوں میں لکھا جائے گا ۔ (طبرانی )

میرے پیارے آقاﷺ کے پیارے دیوانو! فجر کی دو سنت کی ادائیگی کے بعد فرض کے انتظار میں ذکر الٰہی میں مصروف رہنا کتنا عظیم ثواب ہے۔ اور ایسے بندے کی نماز اور اس کے مقام کو تاجدار کائناتﷺ نے کتنا بلندفرمایا ہے ۔ کاش کہ ہم اپنی نیند قربان کر کے فجر کی نماز کے لئے بیدار ہوتے ،اور وقت پرنماز با جماعت ادا کرتے۔ یقینا جو رب تبارک وتعالیٰ آخرت میں عزت اور سربلندی عطا فرمائے گا وہ دنیا میں بھی اس سے سرفراز فرمائے گا ۔ کاش ہم اس کا خیال کر تے ۔ آج ہی صدق دل سے توبہ کرکے نماز با جماعت کا ارادہ کر لیں اور اس کے لئے کو شش کریں تو ضرور بالضرور اللہ د ہم سب سے راضی ہو گا۔ اور رحمت عالم ﷺ بھی خوش ہوں گے ۔ رب قدیر اپنے پیارے محبوب ﷺ کے صد قہ و طفیل ہم سب کو نماز با جماعت ادا کرنے کی توفیق عطا فرمائے ۔آمین بجاہ النبی الکریم علیہ افضل الصلوٰۃ والتسلیم۔