مسجد کے متعلق چند احادیث کریمہ :-

حدیث :- بخاری ، مسلم ابوداؤد ، ترمذی اور ابن ماجہ حضرت ابوہریرہ رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے راوی کہ حضورِ اقدس ،رحمت عالم صلی اللہ تعالیٰ علیہ و سلم ارشاد فرماتے ہیں ’’مرد کی نماز مسجد میں جماعت کے ساتھ پڑھنا گھر میں اور بازارمیں پڑھنے سے پچیس درجے زائد ہے ۔‘‘

حدیث :- ابوداؤد و ابن حبان حضرت ابوامامہ رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے راوی کہ حضورِ اقدس صلی اللہ تعالیٰ علیہ و سلم ارشاد فرماتے ہیں ’’ تین شخص اللہ عزوجل کی ضمان میں ہیں۔اگر زندہ رہیں تو روزی دے اور کفایت کرے اور مرجائیں تو جنت میں داخل کرے۔ (۱) جو شخص گھر میں داخل ہوا اور گھر والوں کو سلام کرے وہ اللہ کی ضمان میں ہے (۲) جو مسجد کو جائے وہ اللہ کی ضمان میں ہے اور (۳) جو اللہ کی راہ میں نکلا وہ اللہ کی ضمان میں ہے ۔‘‘

حدیث :- صحیح مسلم شریف میں حضرت ابوہریرہ رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے مروی کہ حضورِ اقدس صلی اللہ تعالی ٰعلیہ و سلم ارشاد فرماتے ہیں ’’ ان احب الارض الی اللہ مساجدہا وابغض الارض الی اللہ اسواقہا ‘‘ ترجمہ :- اللہ عزوجل کو سب جگہ سے زیادہ محبوب مسجدیں ہیں اور سب سے زیادہ مبغوض(Hated) بازار ہیں ۔‘‘

حدیث :- صحیح مسلم شریف میں حضرت ابو اسید رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے مروی ہے کہ حضور اقدس صلی اللہ تعالیٰ علیہ و سلم فرماتے ہیں ’’ جب کوئی مسجد میںجائے تو کہے کہ ’’اللہم افتح لی ابواب رحمتک ‘‘ اور جب نکلے تو کہے ’’ اللہم انی اسئلک من فضلک‘‘

حدیث :-ابن ماجہ حضرت ابوسعید خدری رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے راوی کہ حضورِاقدس صلی اللہ تعالیٰ علیہ و سلم ارشاد فرماتے ہیں ’’ جو مسجد سے اذیت کی چیز نکالے ، اللہ تعالیٰ اس کے لئے جنت میں ایک گھر بنائے ۔‘‘

حدیث :- ترمذی و دارمی حضرت ابوہریرہ رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے راوی کہ حضور اقدس صلی اللہ تعالیٰ علیہ و سلم ارشاد فرماتے ہیں ’’ جب کسی کو مسجد میں خرید و فروخت کرتے دیکھو تو کہو خدا تیری تجارت میں نفع نہ دے۔‘‘

حدیث :- بیہقی شعب الایمان میں حضرت حسن بصری رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے مرسلاً راوی کہ حضورِ اقدس صلی اللہ تعالیٰ علیہ و سلم ارشاد فرماتے ہیں ’’ ایک زمانہ ایسا آئے گا کہ مساجد میں دنیا کی باتیںہوں گی ۔ تم ان کے ساتھ نہ بیٹھناکہ خدا کو ان سے کچھ کام نہیں ۔‘‘