عزت کی بحالی توبہ سے ہوگی

اسلام کا فرمان ہے وللہ العزۃ و لرسولہ وللموٗمنین اور عزت اللہ کے لئے اس کے رسول کے لئے اور ایمان والوں کے لئے ہے

اس فرمان کے بموجب تمامی صاحب ایمان باعزت ہیں،لیکن ایک شرابی اسلامی شریعت میں وہاں تک بے وقعت ہے جب تک توبہ نہ کرلے،ایک زانی وہاںتک رسوا ہے جب تک توبہ نہ کرلے،بے نمازی وہاں تک بے عزت ہے جب تک توبہ نہ کر لے،اسلام کا کام عزت دینا تھا وہ اس نے کر لیا،مگر اس کے بعد رسوائیوں کو ہم نے اپنے اعمال بد سے دعوت دی تو اسکا انجام بھی ہمیں کو بھگتنا ہوگا،اسی طرح سے عورتوں نے اپنی عزت کو پامال کر لیا،اسکا انجام بد وہ بھگت رہی ہیں کہ آج نکاح ہوا اور کل سے طلاق کی بات شروع ہو گیٔ،اگر توبہ کر لی جائے تو عزت بحال ہو سکتی ہے

رہزن کبھی رہبر ہو نہیں سکتا ۔ اسلام پر اعتماد کرکے دیکھو